نامزد افراد میں جے یو آئی ف کے رہنما بھی شامل

اسلام آباد میں عورت مارچ کے شرکا پر پتھراو کرنے کا مقدمہ جے یو آئی ف کے رہنما سمیت 12 افراد کے خلاف درج کرلیا گیا ہے۔

مختلف دفعات کے تحت یہ مقدمہ اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مجسٹریٹ غلام مرتضی کی مدعیت میں درج کیا گیا ہے ، اس میں جے یو آئی ف کے رہنما مولانا عبدالمجید ہزاروی سمیت 12 افراد کو نامزد کیا گیا ، دیگر نامزد افراد میں مولانا شبیر احمد عثمانی ، مولانا حافظ مقصود احمد ، مولانا رضوان مکی ، مفتی عبداللہ ، مولانا عبدالوحید قاسمی ، مولانا عبداالرشید توحیدی ، مولانا لیاقت علی ترابی ، مولانا ناصر احمد، مولانا اسد اللہ عباسی اور مولانا عبدالرزاق حیدری شامل ہیں۔

ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ مختلف مذہبی و سیاسی جماعتوں کے کارکنوں اور مدارس کے طلبا نے روڈ پر قبضہ کیا اور لوگوں کو تشدد پر اکسایا ، سیکیورٹی اہلکارؤں کے خلاف طاقت استعمال کرتے ہوئے عورت مارچ میں داخل ہونے کی بھی کوشش کی۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز عورت مارچ کے شرکا نعرے لگاتے آگے بڑھ رہے تھے، اس دوران مشتعل افراد نے پتھراو کیا تھا۔

پتھر لگنے سے مقامی ٹی وی کا رپورٹر زخمی ہوا تھا جسے طبی امداد دے کر فارغ کردیا گیا تھا۔

عورت مارچ کے آخر میں مرنے کو تیار اور عورت ہوگی آزاد جیسے نعرے لگائے گئے تھے۔

ٹرینڈنگ

مینو