امریکا:مزید 2100 اموات، نیوجرسی چین سے آگے

دنیا بھرمیں کورونا سے ہلاک افراد کی تعداد ایک لاکھ 45 ہزار 5 سو اور کیسز پونے 22 لاکھ سے بھی زیادہ ہوچکے ہیں، امریکا میں مزید 2100 ، کینیڈا 181 ، اسپین 503 ، اٹلی 525 ، فرانس 753 ، جرمنی 248 ، ایران 92، بیلجئم 417 ، سعودی عرب 4 اور متحدہ عرب امارات میں 2اموات ہوئی ہیں۔

نیویارک میں لاک ڈاؤن کارگر ثابت ہوگیا ، اموات اور اسپتالوں میں داخل مریضوں کی تعداد کم ہونے لگی، ریاست میں ابتک 16 ہزار 251 ہلاکتیں ہوچکی ہیں، نیوجرسی میں انتقال کرنے والے افراد کی تعداد چین میں اموات سے زیادہ ہوگئی ، وبا یہاں ساڑھے 3 ہزار افراد کی جان لے چکی ہے، میسا چوسٹس ، مشی گن، کیلی فورنیا ، الی نوائے اور فلوریڈا میں بھی اموات بڑھ رہی ہیں۔

امریکی صدر کے ہم خیال افراد نے مختلف ریاستوں میں اپنی طاقت دکھا دی ہے، مشی گن ، شمالی کیرولائنا ، اوہائیو، یوٹاہ اور ورجینیا میں لاک ڈاؤن نامنظور کے نعرے بلند ہورہے ہیں۔

مظاہرین صدر ٹرمپ کے پوسٹر اٹھا کر سڑکوں پر نکلے ہیں لیکن نیویارک میں لاک ڈاؤن 15 مئی تک بڑھا دیا گیا ہے، گورنر کومو کہتے ہیں کہ لاک ڈاؤن ختم ہونے کے بعد بھی سماجی دوری کا قانون کتنی دیر لاگو رہے گا اس بارے میں فی الحال کچھ نہیں کہا جاسکتا، 15 مئی کے بعد کچھ لوگوں کو کام پر جانے کی اجازت دینے کیلئے غور کیا جائے گا، کاروبار مرحلہ وار کھولے جائیں گے اور کاروباری افراد کو شرائط پر عمل کا ثبوت دینا ہوگا۔

کینیڈا میں لگ بھگ 12 سو اموات ہوچکی ہے اور صورتحال دن بدن بگڑتی جارہی ہے، 15 سو نئے مریض اسپتال پہنچے ہیں اور کیسز تقریبا 30 ہزار ہوچکے ہیں، اسپین میں اموات 19 ہزار 315 اور اٹلی میں 22 ہزار 170 ہوچکی ہیں، وبا فرانس میں 17 ہزار 920 شہریوں کی جان لے چکی ہے، ایران میں 4 ہزار 869 ، سعودی عرب 83 اور متحدہ عرب امارات میں 35 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو