امریکا اور طالبان 29 فروری کو دستخط کریں گے

امریکا اور طالبان بین الاقوامی مبصرین کی موجودگی میں 29 فروری کو امن معاہدے پر دستخط کریں گے۔ طالبان نے آج سے ایک ہفتے تک جنگ بندی کا اعلان کیا ہے جس پر عملدرآمد شروع کردیا گیا ہے۔

طالبان نے امن معاہدے سے پہلے ایک ہفتے تک حملے نہ کرنے کیلئے اپنی تنظیم کے ارکان کو ہدایت جاری کردی۔

جنگ سے تباہ حال افغانستان میں امن کی امید پیدا ہوگئی، طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ٹویٹر پیغام میں تصدیق کی ہے کہ امن معاہدے پر اتفاق ہوگیا ہے، معاہدے پر 29 فروری کو دستخط کئے جائیں گے اور مختلف ممالک کے نمائندوں کو بھی مدعو کیا جائے گا، طالبان کے مطابق معاہدے پر دستخط سے پہلے سیکیورٹی صورتحال بہتر کی جائے گی۔

امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے بھی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا ملک 29 فروری کو طالبان سے امن معاہدے کیلئے تیار ہے ، مائیک پومپیو نے ایک بیان میں کہا کہ دوحہ مذاکرات کے بعد افغانستان میں تشدد ختم کرنے کا سمجھوتہ کیا گیا۔ امن معاہدے پر دستخط کے بعد بین الافغان بات چیت شروع ہوگئی ، یہ عمل مکمل جنگ بندی کی راہ ہموار کرے گا۔

اس سے پہلے افغان قومی سلامتی کونسل کے ترجمان نے بتایا تھا کہ طالبان اور امریکا میں عارضی جنگ بندی کا آغاز 22 فروری سے ہوگا جو 7 روز جاری رہے گی۔ ذرائع کے مطابق امن معاہدے پر دستخط کے بعد دونوں جانب سے قیدیوں کی رہائی کا عمل شروع ہونے کا امکان ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو