امریکا اور کینیڈا میں بڑھتی اموات، وجہ کیا ؟

کورونا وائرس دنیا بھر میں 2 لاکھ 44 ہزار سے زائد افراد کی جان لے چکا ہے ، کیسز 35 لاکھ ہوگئے ہیں ، امریکا میں مزید ڈیڑھ ہزار، کینیڈا پونے دوسو، برطانیہ میں 621، فرانس میں 166 ، ایران میں 65 ، سعودی عرب 7 اور متحدہ عرب امارات میں 8 افراد لقمہ اجل بنے ہیں۔

امریکا میں کورونا سے متاثرہ ترین ریاست نیویارک میں 299 افراد کا انتقال ہوا اور ہلاکتوں کی تعداد 24 ہزار 368 ہوگئی، مزید 4 ہزار کیسز رپورٹ ہوئے اور وائرس اب تک لگ بھگ 3 لاکھ 20 ہزار افراد کو بیمار کرچکا ہے۔ نیوجرسی میں اموات پونے 8 سو ہوگئی ہیں ، کیلی فورنیا میں 21 سو اور فلوریڈا میں ساڑھے 13 سو سے زائد افراد زندگیوں سے محروم ہوچکے ہیں۔ طبی ماہرین کا خیال ہے کہ لاک ڈاؤن میں تاخیر اور پابندیوں پر مکمل عمل نہ ہونے سے اموات میں اضافہ ہورہا ہے۔

کینیڈا میں اموات 3 ہزار 600 ہوگئی ہیں، ڈیڑھ ہزار نئے مریض اسپتال پہنچے اور ابتک 56 ہزار 700 متاثر ہوچکے ہیں۔

برطانیہ اموات میں اٹلی کے قریب پہنچ گیا اور ہلاکتیں 28 ہزار 131 ہوگئیں ، برطانوی میڈیا کے مطابق اگرچہ حکومت لاک ڈاؤن میں نرمی کی منصوبہ بندی کررہی ہے لیکن دفاتر جلد کھولے جانے کا کوئی امکان نہیں ہے۔ اٹلی یورپ میں سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے، یہاں وائرس اب تک 28 ہزار 710 افراد کی جان لے چکا ہے۔

اسپین میں لاک ڈاؤن نرم ہوتے ہی شہریوں کی بڑی تعداد سڑکوں پر نکل آئی ، یہ پابندیاں 15 مارچ کے بعد نرم کی گئی ہیں۔

ملک میں وبا کا دوبارہ پھیلاو روکنے کیلئے اقدامات کئے جارہے ہیں اور پبلک ٹرانسپورٹ میں سفر کرنے والے افراد کیلئے ماسک پہننا لازمی قرار دیا گیا ہے۔ فرانس میں کورونا سے ہلاک افراد کی تعداد 24 ہزار 760 ہے ، ایک ہزار نئے کیس رپورٹ ہونے کے بعد متاثرین ایک لاکھ 68 ہزار سے زائد ہوچکے ہیں۔

کورونا وائرس نے ایران میں 6 ہزار 156 زندگیاں چھینیں اور کیسز ساڑھے 96 ہزار تک پہنچ گئے ہیں ، سعودی عرب میں 176 افراد کا انتقال ہوچکا ہے اور وبا نے ساڑھے 25 ہزار شہریوں کو متاثر کیا ہے ، متحدہ عرب امارات میں ہلاکتیں 119 اور کیسز 13 ہزار 6 سو ہوگئے ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو