دنیا بھارت میں آر ایس ایس آئیڈیالوجی کا نوٹس لے، وزیراعظم

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ معلوم تھا بھارت پلوامہ واقعے کے بعد کچھ نہ کچھ کرے گا ، بھارتی جارحیت پر پاکستان کا ردعمل ذمے دارانہ تھا اور دنیا یاد رکھے گی۔ بھارت میں 20 کروڑ مسلمانوں کو ہدف بنایا گیا ہے ، نازی آئیڈیالوجی اختیار کرنے کے بعد صرف خون ہی بہتا ہے۔ عالمی برادری کو مداخلت کرنی چاہئے۔

بالا کوٹ میں بھارتی جارحیت کا منہ توڑ جواب دینے کا سال مکمل ہونے پر وزیراعظم ہاوس میں تقریب ہوئی، اس میں تینوں مسلح افواج کے سربراہان ، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور دیگر وزراء بھی شریک ہوئے۔

وزیراعظم عمران خان نے بتایا کہ قوم جس طرح بحران سے نکلی وہ قابل فخر ہے، پاکستان نے بھارتی اقدام پر انتہائی ذمے داری کا مظاہرہ کیا اور یہی وجہ ہے کہ صورتحال زیادہ خراب نہیں ہوئی، بھارتی جارحیت میں جانی نقصان نہیں ہوا تو پھر اسی کے مطابق جواب دیا گیا۔

وزیراعظم نے بتایا کہ بھارتی پائلٹ کی واپسی بھی ذمے دارانہ اقدام تھا ، پاک فوج نے قابل فخر انداز سے جارحیت کا جواب دیا اور اس معاملے پر تمام جماعتیں بھی ایک پیج پر تھیں۔ قوم جس طرح بحران سے نکلی وہ قابل فخر ہے۔

وزیراعظم نے دہلی میں پرتشدد واقعات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ بھارت جس راستے پر چل پڑا ہے اس سے واپسی مشکل ہے۔ بھارت مشکل میں پھنس چکا ہے، نازی ازم اور آر ایس ایس جیسے نظریات پر چلنے سے ہمیشہ خونریزی ہوتی ہے ، متنازع شہریت قانون سے 20 کروڑ مسلمانوں کو نشانہ بنایا گیا اور مودی کے اقدامات کا نقصان بھارت کو ہوگا۔

عمران خان نے کہا کہ عالمی برادری کو اقلیتوں کے خلاف بھارتی اقدامات پر کھڑے ہونا چاہئے ، آر ایس ایس کے غنڈے دہلی میں لوگوں پر تشدد کر رہے ہیں جبکہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں بھی 80 لاکھ افراد کو محصور کررکھا ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو