اٹلی : تدفین پر پابندی، اسپتال تیار رکھیں، ڈبلیو ایچ او

عالمی ادارہ صحت نے کورونا وائرس کو عالم گیر وبا قرار دے دیا ، دنیا بھر میں ہلاک افراد کی تعداد 4 ہزار 6 سو سے زائد اور کیسز سوا لاکھ سے زیادہ ہوچکے ہیں۔ چین میں مزید 11 ، جنوبی کوریا میں 6 ، جاپان ، یونان اور عراق میں مزید 1 ، 1 شہری کی ہلاکت ہوئی ہے، اٹلی میں 827 ، ایران میں 354 ، امریکا 38، فرانس 48، اسپین 55 اور برطانیہ میں 8 اموات ہوچکی ہیں، بیلجئم اور جرمنی میں بھی 3 ، 3 شہری ہلاک ہوئے ہیں۔ 

عالمی ادارہ صحت نے آخر کار کورونا کو وبا قرار دیدیا۔ ڈبلیو ایچ او نے تمام ممالک کو ایمرجنسی ریسپانس بڑھانے ، اسپتال تیار رکھنے اور  ہیلتھ ورکرز کو تربیت دینے کی ہدایت کردی ہے۔

چین نے مرض پر بڑی حد تک قابو پالیا ہے البتہ ایران اور لاک ڈاون کے باوجود اٹلی میں ہلاکتیں نہیں رک سکی ہیں۔

اٹلی میں کورونا کے مریض پاکستانی شہری امتیاز احمد جاں بحق ہوگئے ہیں، یہاں سوا 8 سو سے زائد اموات ہوچکی ہیں اور اب شادی کی تقریبات اور تدفین سمیت عوامی اجتماعات پر پابندی لگادی گئی ہے۔

اسکول، جم ، عجائب گھر ، نائٹ کلب اور دیگر ایسے ہی مراکز بند کرانے کا اعلان کیا گیا ہے جبکہ سفری پابندیاں بھی زیرغور ہیں۔

جرمنی میں اموات اورمریضوں کی بڑھتی ہوئی تعداد دیکھنے کے بعد چانسلر نے کورونا سے ملک کی 70 فیصد آبادی کے متاثر ہونے کا خدشہ ظاہر کیا ہے اور حکومت بڑے اجتماعات پر پابندی چاہتی ہے۔

اسپین میں 50 سے زائد ہلاکتیں ہوئی ہیں اور 2 ہزار 2 سو سے زائد کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں ، میڈریڈ سب سے زیادہ متاثر ہے جہاں تعلیمی ادارے 15 دن کیلئے بند کرنے پڑے ہیں۔ ہنگری میں ایمرجنسی نافذ ہونے کے بعد عمارتوں کے اندر 100 اور عمارتوں کے باہر 5 سو سے زائد افراد کے اجتماع پر پابندی ہے، اٹلی ، چین ، جنوبی کوریا اور ایران سے شہریوں کی آمد روکی جاچکی ہے اور یونیورسٹیز بند ہیں۔

بیلجئم میں ہلاکتوں کی خبر کے بعد خوف لوگوں کے چہروں سے ظاہر ہے۔ یہاں 3 سو سے زائد کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں۔ برطانیہ میں 8 اموات کے بعد وزیراعظم پر اسکول کی بندش، فٹبال میچز منسوخ کرنے اور ملازمین کو گھروں سے کام کرنے کی ہدایت دینے کیلئے دباو بڑھتا جارہا ہے۔

امریکا میں اہم اجتماعات منسوخ یا ملتوی کئے جاچکے ہیں، ان میں کئی میوزک فیسٹول اور لاس اینجلس کا ای تھری گیمنگ شو بھی شامل ہے۔ ریاست واشنگٹن کے گورنر نے 3 کاونٹیز میں بڑے اجتماعات پر پابندی لگادی ہے۔ ملک میں کئی اہم یونیورسٹیز بند کی جاچکی ہیں اور آن لائن کلاسز کا آغاز کیا گیا ہے۔

امریکی سینیٹ میں سب سے بزرگ سینیٹر ڈائن فائن اسٹائن نے دارالحکومت عارضی طور پر بند کرنے کی تجویز دیدی ہے۔

گورنر کینٹکی نے چرچ سے سروس ملتوی کرکے ورچول سروس کی اپیل کی ہے۔ دنیا بھر میں اموات بڑھتی ہی جارہی ہیں لیکن کورونا کی ویکسین اب تک تیار نہیں کی جا سکی ہے ، طبی ماہرین ترقی یافتہ ممالک کی صورتحال دیکھ کر ترقی پذیر ملکوں کے شہریوں کی زندگیوں کیلئے فکر مند ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو