برطانوی وزیرداخلہ پریتی پٹیل کیخلاف تحقیقات

برطانیہ کی وزیرداخلہ پریتی پٹیل ملک کی خفیہ ایجنسیوں ایم آئی 6 اور جی سی ایچ کیو پر پنجہ گاڑھ کر انہیں اپنے زیر اثر لانا چاہتی تھیں مگر انکی یہ کوشش ناکام بنادی گئی ہے۔

برطانوی اخبار کے مطابق پریتی پٹیل چاہتی تھیں کہ وزارت خارجہ کے زیراثر کام کرنے والی یہ دونوں خفیہ ایجنسیاں وزارت داخلہ کے ماتحت آجائیں لیکن سر سیڈویل نے پٹیل کو روک کر ان کی یہ کوشش ناکام بنادی۔

پریتی پٹیل کے خلاف وزیراعظم بورس جانسن نے تحققیات کاحکم دیا ہے۔ پریتی پٹیل کو اس الزام کا سامنا ہے کہ وہ ماتحت عملے کے ساتھ انتہائی برا رویہ رکھتی تھیں۔

پریتی پٹیل کے مبینہ ناروا سلوک سے دل برداشتہ ہو کر وزارت داخلہ کے سینئر ترین بیورکریٹ سر فلپ رت نم پچھلے ہفتے مستعفی ہوگئے تھے اور انہوں نے پٹیل کیخلاف عدالت کا دروازہ کھٹکھٹانے کااعلان کیا تھا۔

پریتی پٹیل ہی کے رویئے پر ماضی میں ایک خاتون اہلکار بھی دلبرداشتہ ہوگئی تھیں اور مبینہ طور پر انھوں نے ضرورت سے زیادہ دوائیاں کھالی تھیں۔ برطانیہ کی وزیرداخلہ کا اس صورتحال پر موقف سامنے نہیں آیا تاہم برطانوی میڈیا کےمطابق پریتی پٹیل کو وزیراعظم بورس جانسن کی مکمل حمایت حاصل ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو