کشمیر پر قبضہ جائز قرار ، ثالثی کی پیشکش مسترد

بھارت نے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کیلئے امریکا کے بعد اب اقوام متحدہ کی پیشکش بھی مسترد کردی ہے۔

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتریس نے گزشتہ روز اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران ثالثی کی پیشکش کی تھی، انھوں نے مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا تھا۔

بھارتی اخبار دی ہندو کے مطابق بھارت نے کسی تیسرے فریق کی ثالثی کا امکان مسترد کردیا ہے، وزارت خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے مقبوضہ وادی پر بھارتی قبضے کو جائز قرار دے کر اقوام متحدہ کا مذاق اڑایا اور آزادی مانگنے والوں کو دہشت گرد قرار دے دیا ، انھوں نے کہا کہ انتونیو گوتریس پاکستتانی اقدامات پر توجہ دیں۔

یاد رہے کہ اس سے پہلے امریکی صدر نے ثالثی کی پیشکش کی تھی تاکہ 70 برس پرانا مسئلہ حل ہوسکے جسے بھارت نے مسترد کردیا تھا۔

گزشتہ ہفتے ترک صدر رجب طیب اردوان نے مسئلہ کشمیر پر پاکستانی موقف کی حمایت کی تب بھی بھارت بلبلا اٹھا تھا، بھارتی حکام نے کہا تھا کہ ترک صدر داخلی معاملات میں مداخلت نہ کریں۔

ٹرینڈنگ

مینو