تفتان: قرنطینہ میں موجود زائرین کی تعداد 1731 ہوگئی

حکومت نے کورونا وائرس کا پھیلاو روکنے کیلئے پاک افغان چمن بارڈر بند کردیا، ایران سے تفتان پہنچنے والے زائرین کو 14دن کیلئے آئیسولیشن وارڈ میں رکھا جا رہا ہے۔

پاک افغان چمن بارڈر ایک ہفتے بند رہے گا ، اس دوران لوگوں کی آمد و رفت اور کاروباری سرگرمیاں بھی معطل رہیں گی۔

طور خم بارڈر سے اگرچہ آمد و رفت بحال ہے لیکن یہاں بھی میڈیکل چیک پوائنٹ بنایا گیا ہے ، لنڈی کوتل اور جمرود کے اسپتالوں میں پہلے ہی آئیسولیشن وارڈز قائم ہیں۔

افغان سرحد کے دیگر قریبی علاقوں میں بھی حفاظتی انتظامات کئے جارہے ہیں، پارا چنار کے ڈی ایچ کیو اسپتال میں آئسولیشن وارڈ قائم کیا جاچکا ہے۔

پاک ایران تفتان بارڈر سے پاکستانی زائرین کی واپسی کا عمل جاری ہے ، گزشتہ روز 1321 شہریوں کی آمد کے بعد قرنطینہ میں رکھے گئے افراد کی تعداد 1731 ہوگئی ہے، یہ لوگ 14 دن قرنطینہ میں رہیں گی۔

ٹرینڈنگ

مینو