جنوبی کوریا کی فلم نے تاریخ رقم کردی

جنوبی کوریا کی پیراسائٹ 4 آسکر لے اڑی ، یہ پہلی غیرملکی اور پہلی غیرانگریزی فلم ہے جیسے یہ اعزاز حاصل ہوا ہے۔ اس خبر کے بعد جنوبی کوریا میں خوشی کی لہر دوڑ گئی اور دنیا بھر میں جنوبی کوریا کے باشندوں کا سر بھی فخر سے بلند ہوگیا۔

پیراسائٹ جنوبی کوریا کی وہ پہلی فلم ہے جسے اکادمی ایوارڈ کیلئے نامزد کیا گیا اور اس نے بہترین فلم کا ایوارڈ بھی اپنے نام کرلیا۔ خیال کیا جا رہا تھا کہ 1917 بہترین فلم کا ایوارڈ اپنے نام کرے گی۔

ڈولبی تھیٹر ہالی ووڈ میں منعقد اس رنگارنگ تقریب میں  بونگ جون ہو نے پیراسائٹ فلم کے بہترین ڈائریکٹر کا آسکر وصول کیا۔ اس موقع پر جون ہو نے کہا کہ جنوبی کوریا کیلئے پہلا آسکر جیتنا قابل فخر ہے۔

یہ جون ہو کی ساتویں فلم ہے اور اس کی کہانی سرمایہ دارانہ نظام ، لالچ اور طبقاتی تفریق کے گرد گھومتی ہے۔ ایوارڈ جیت کر ہو جذباتی نظر آئے اور اس بات پر خوش بھی کہ اکادمی ایوارڈز کے دروازے غیر انگریزی فلموں کیلئے بھی کھل گئے ہیں۔

پیراسائٹ نہ صرف بہترین فلم قرار پائی بلکہ بہترین انٹرنیشنل اوریجنل اسکرین پلے ، بہترین انٹرنیشنل فیچر فلم اور بہترین ڈائریکٹر کا آسکر بھی اپنے نام کرگئی۔

ٹرینڈنگ

مینو