زائرین کو وطن لانے کی درخواست مسترد

اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایران میں پھنسے زائرین کو وطن لانے کی درخواست مسترد کردی۔

مجلس وحدت المسلمین کے وائس چیئرمین ناصر عباس نے درخواست میں موقف اختیار کیا تھا کہ ایران میں ہزاروں پاکستانی پھنسے ہوئے ہیں، ان کے ویزے ختم ہوچکے ہیں اور انھیں واپس آنے کی اجازت دی جائے، ملک میں ایسا تاثر دیا جارہا ہے کہ سارے مسائل زائرین کی وجہ سے ہوئے ہیں۔

چیف جسٹس اسلام آبادہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے درخواست گزار سے پوچھا کہ کیا انھوں نے وزارت خارجہ سے رابطہ کیا ہے ؟ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ حکومت پر اعتماد کریں، یہ نتیجہ نہ نکالیں کہ حکومت کچھ نہیں کررہی، پارلیمنٹ اور ایگزیکٹو موجود ہیں، متعلقہ فورم سے رجوع کیا جائے،  یہ معاملہ پارلیمنٹ اور وزارت خارجہ کا ہے، عدالتوں کا نہیں، عدالت کسی بھی تنازع میں نہیں پڑے گی۔

یاد رہے کہ حکومت نے پہلے زائرین کو تفتان بارڈر سے داخلے کی اجازت دی تھی اور انھیں قرنطینہ میں رکھا گیا تھا، بعد میں تمام افراد کو متعلقہ صوبوں میں بھیج دیا گیا ، ان زائرین میں سے درجنوں کورونا کے مریض ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو