الیکشن جیتا تو سفارتخانہ تل ابیب لانے پر غور ہوگا، سینڈرز

امریکا کے صدرارتی امیدوار بننے کے ڈیموکریٹ خواہش مندوں کے درمیان جنوبی کیرولائنا کا مباحثہ برنی سینڈرز نے جیت کر اپنی پوزیشن مزید مستحکم کرلی ، ٹھوس دلائل کے سبب پیعٹ بڈاجج اور الزبتھ وارن بھی طاقت ور امیدوار بن کر سامنے آئے۔ برنی سینڈرز نے کہا کہ اگر وہ الیکشن جیت گئے تو اسرائیل میں امریکی سفارت خانہ بیت المقدس سے واپس تل ابیب لے جانے پر غور کریں گے۔

ہفتے کو ڈیموکریٹ پرائمری سے پہلے منگل کو جنوبی کیرولائنا میں مباحثہ ہوا ، اس میں برنی سینڈرز ، پیعٹ بڈاجج ، جو بائیڈن ، الزبتھ وارن ، مائیکل بلوم برگ، ٹام اسٹائر اور ایمی کلوبوچار نے حصہ لیا۔ ڈیموکریٹ صدارتی امیدوار بننے کے تمام خواہش مندوں کی کوشش تھی کہ وہ سرفہرست امیدوار برنی سینڈرز کو نیچا دکھا سکیں۔

ایک موقع پر برنی سینڈرز طنز کرتے ہوئے دلچسپ انداز میں بولے آج رات ان کا نام کچھ زیادہ ہی لیا جا رہا ہے ، انھوں نے معنی خیز انداز میں کہا کہ سمجھ نہیں آرہا کہ اس کی وجہ کیا ہے؟

سابق سرفہرست ڈیموکریٹ امیدوار جوبائیڈن نے کہا کہ برنی سینڈرز نے گن کنٹرول کی مخالفت کی تھی  ، اسی وجہ سے سفید فام انتہا پسندوں کے ہاتھوں میں آج ہتھیار ہیں۔ بائیڈن بولے کہ 2007 میں برنی سینڈرز نے اسلحہ سازوں کو کسی بھی ذمہ داری سے مبرا قرار دینے کی حمایت کا بل منظور کیا تھا ، ان 13 برس میں گن وائلنس سے دنیا میں ڈیڑھ کروڑ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

نووارد ارب پتی مائیکل بلوم برگ نے سوشلسٹ نظریات کے حامل برنی سینڈرز پر الزام لگایا کہ روس کے صدر پیوٹن ان کی حمایت کر رہے ہیں۔

برنی سینڈرز نے روس کے صدر کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اگر وہ صدر بنے تو ولادیمیر پیوٹن امریکا کے انتخابات میں کبھی مداخلت نہیں کرسکیں گے۔

ڈیموکریٹ پارٹی کی سرکردہ شخصیات نے ارب پتی نوارد مائیکل بلوم برگ کو بھی خوب آڑے ہاتھوں لیا۔ الزبتھ وارن نے کہا کہ بلوم برگ کے پاس چاہے کتنی ہی دولت ہو وہ ڈیموکریٹ پارٹی کے مرکزی رہنماوں کا اعتماد حاصل نہیں کرسکتے۔ وجہ یہ ہے کہ بلوم برگ اپنی رقم ری پبلکنز پر بھی خرچ کرتے رہے ہیں۔

ریاست انڈیانا کے سابق میئر پیعٹ بڈاجج نے اس بار بھی غیر معمولی پرفارمنس پیش کی۔ انھوں نے خود کو برنی سینڈرز سے یکسر مختلف ظاہر کیا۔ بڈاجج نے ڈیموکریٹس کو خبردار کیا کہ وہ سوشلسٹ نظریات کے حامل شخص کو منتخب نہ کریں۔

صدارتی امیدوار بننے کے ڈیموکریٹ خواہش مندوں میں سے ایک کا چناو کرنے کیلئے ہفتے کو جنوبی کیرولائنا میں پرائمری یعنی الیکشن ہوگا ،اس کے بعد منگل کو کیلی فورنیا سمیت درجن بھر ریاستوں  میں سپرٹیوزڈے الیکشن ہوگا۔ سپرٹیوزڈے ہی کے نتائج کی بنیاد پر صدارتی امیدوار بننے کے ڈیموکریٹ خواہش مندوں میں سے  کسی ایک کے واضح طور پر ابھرنے کا امکان ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو