سینیٹرمیننڈیز اے پی پیک سے خطاب کریں گے

محسن رضا

امریکن پاکستانی پبلک افئیرز کمیٹی نے نیوجرسی میں بھی چیپٹر کھولنے کا اعلان کردیا ، افتتاح یکم مارچ کو کیا جائے گا۔

امریکی سینیٹ میں امور خارجہ کمیٹی کے رکن سینیٹر باب میننڈیز کو تقریب میں مدعو کیا گیا ہے۔ ان کا تعلق نیوجرسی ہی سے ہے۔ وہ سینیٹ میں امور خارجہ کمیٹی کے چئیرمین بھی رہ چکے ہیں اور اس وقت بھی انتہائی بااثر ڈیموکریٹ سینیٹر ہیں۔

امریکن پاکستانی پبلک افیئر کمیٹی (اے پی پیک) کے چیئرمین ڈاکٹر اعجاز احمد نے زبرنیوز کو بتایا کہ نیوجرسی میں چیپٹر کھولنے کا مقصد ریاست کی پاکستانی کمیونٹی کو اپنے مسائل کا حل تلاش کرنے میں مدد فراہم کرنا ہے۔

سینیٹر باب میننڈیز بھارت کی متعصبانہ پالیسیوں کو انتہائی کڑی تنقید کا نشانہ بناتے رہے ہیں۔ چند روز پہلے اپنے ایک بیان میں سینیٹر میننڈیز نے امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ بھارت پر زور دیں کہ شہریت سے متعلق متنازعہ قانون فوری طور پر واپس لیا جائے اور بھارت میں مذہبی اور انسانی حقوق کا احترام یقینی بنایا جائے۔

سینیٹر میننڈیز نے بھارت کو مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر بھی آڑے ہاتھوں لیا تھا۔

مودی سرکار کی جانب سے سب اچھا ہے کی گردان مسترد کرتے ہوئے انھوں نے مائیک پومپیو سے کہا تھا کہ کشمیر کی صورتحال نارمل نہیں۔ لاک ڈاون کے سبب کشمیری عوام نوکریوں سے محروم ہو رہے ہیں اور معیشت تباہ ہوچکی ہے۔

نیوجرسی میں ہونے والی اس تقریب کی میزبانی ڈاکٹر طارق ابراہیم، ڈاکٹر محمود عالم اور عمر چوہدری کر رہے ہیں، سینیٹر باب میننڈیز بھی تقریب سے خطاب کریں گے۔ اس موقع پر کمیونٹی کی شخصیات کو امریکا کے سرکردہ ڈیموکریٹ سینیٹر سے براہ راست بات چیت کا موقع ملے گا۔

نیوجرسی سے تعلق رکھنے والی پاکستانی کمیونٹی نے اے پی پیک کا ریاست میں چیپٹر کھولے جانے کا خیر مقدم کیا ہے۔ زبرنیوز سے بات کرتے ہوئے پاکستانی کمیونٹی کے افراد کا کہنا تھا کہ امریکا میں صدارتی انتخابات سے پہلے یہ اقدام انتہائی اہم ہے۔ غیرجانب دار امریکن پاکستانی پبلکن افئیرز کمیٹی امریکا کی دونوں بڑی سیاسی جماعتوں ری پبلکنز اور ڈیموکریٹس کے اراکین کانگریس کو مدعو کرتی ہے تاکہ کمیونٹی کو دونوں کے موقف سے آگاہ رکھا جاسکے۔

ٹرینڈنگ

مینو