شارجہ : رہائشی پاکستانیوں پر کیا گزری؟ ویڈیو

شارجہ کے علاقے النھدہ میں کثیر المنزلہ رہائشی عمارت جل کر تباہ ہوگئی، متاثرین میں پاکستانی فیملیز بھی شامل ہیں جن سے زبر نیوز نے خصوصی بات کی ہے۔

قریبی عمارتوں میں موجود افراد اور اہل علاقہ نے موبائل ویڈیوز سوشل میڈیا پر شیئر کردیں، ان میں دیکھا جاسکتا ہے کہ آگ نے 45 منزلہ ایبکو بلڈنگ کو سوکھی لکڑی کی طرح جلا دیا۔

فی الحال یہ واضح نہیں کہ اتنی بلند عمارت میں رہائش پزیر افراد کو کس طرح باہر نکالا گیا البتہ کرنل سمیع خامس نے تصدیق کی ہے کہ 9 افراد زخمی ہوئے ہیں۔

اماراتی حکام کے مطابق آگ کی اطلاع رات 9 بج کر 40 منٹ پر ملی ، اس کے بعد شارجہ بھر سے فائر بریگیڈ کا عملہ طلب کرلیا گیا۔ حکام کے مطابق آگ دسویں  منزل پر لگی اور دیکھتے ہی دیکھتے پوری عمارت کو لپیٹ میں لے لیا۔

ایبکو ٹاور 2006 میں تعمیر کیا گیا تھا۔ 45 منزلہ اس عمارت کے 36 فلورز پر لوگوں کی رہائش تھی جبکہ ہر منزل پر 12 فلیٹس تھے۔ آگ کے سبب عمارت کے جلتے اور ٹوٹتے حصے نیچے گرتے رہے اور گاڑیاں تباہ ہوتی رہیں۔

ایبکو بلڈنگ میں آتشزدگی کے بعد 5 قریبی عمارتیں بھی خالی کرائی گئیں۔ آگ پر بمشکل قابو پایا جاسکا تاہم اس وقت تک عمارت تباہ ہوچکی تھی۔

حکام نے 432 متاثرہ فلیٹوں کے مکینوں کو متبادل رہائش فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

اسی عمارت کی 36 ویں منزل پر پاکستانی خاتون آمنہ عادل بھی رہائش پزیر تھیں۔ انہوں نے زبرنیوز کو بتایا کہ وہ ، ان کے شوہر اور 10 اور 15 برس کے 2 بچے افطار کرکے بیٹھے تھے ، اسی دوران پڑوسن نے آکر بتایا کہ عمارت میں آگ لگ گئی ہے۔

آمنہ نے بتایا کہ ان کی فیملی نے آئی ڈی کارڈ ، پاسپورٹ اور فیس ماسک سنبھالے ، پہلے تو لفٹ سے نیچے اترے مگر 20 ویں منزل کے بعد سیڑھیوں کے ذریعے اترنے کو ترجیح دی کیونکہ یہی محفوظ راستہ تھا۔

متاثرہ عمارت کے بدقسمت مکینوں میں سے کئی نے زبرنیوز کو بتایا کہ ان کے پاس اپنے قیمتی سامان کی انشورنش نہیں تھی ، متبادل رہائش مل بھی جائے تو زندگی بھر کی جمع پونجی واپس نہیں آسکتی۔ اس سے پہلے شارجہ میں المجاز اسٹریٹ پر واقع المجاز ٹاور کی 16 ویں منزل پر 24 ستمبر 2019 کو آگ لگی تھی، یہ واقعہ بھی منگل ہی کی شب پیش آیا تھا۔

ٹرینڈنگ

مینو