طلبا کا خط کابینہ میں پیش کیا جائے، عدالت

ویب ڈیسک

اسلام آباد ہائی کورٹ نے چین میں مقیم پاکستانی طلبا کا معاملہ وفاقی کابینہ میں زیر بحث لانے کا حکم دے دیا ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے پاکستانی طلبا کی وطن واپسی سے متعلق کیس کی سماعت کی ، درخواست گزار کے وکیل نے ووہان سے طلبا کو نکالنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ چاہیں تو وطن آنے والوں کو جزیرے میں رکھ لیا جائے، چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ پاکستانی طلبہ کو ووہان سے نکال کر چین کے دیگر صوبوں میں شفٹ کرنے کا مطالبہ سامنے آیا ہے، طلبہ اور والدین کے رابطے کا فقدان بھی اہم مسئلہ ہے۔

وزارت خارجہ کے نمائندے نے بتایا کہ چینی قیادت نے وزیراعظم عمران خان کو تمام طلبا کی حفاظت کا یقین دلایا ہے، چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ حکومت کو والدین سے یہ نہیں کہنا چاہئے تھا کہ وہ بچوں کو واپس نہیں لائے گی ، عدالت نے کہا کہ یہ پالیسی معاملہ ہے عدالت براہ راست مداخلت نہیں کرسکتی ، اسے وفاقی کابینہ میں زیر بحث لایا جائے اور چین میں موجود طلبہ کا چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ کو لکھا گیا خط کابینہ میں پیش کیا جائے۔

ٹرینڈنگ

مینو