لیگی رہنما 19 فروری کو نیب آفس طلب

لاہور میں انسداد منشیات کی عدالت نے لیگی رہنما رانا ثنا اللہ کی گاڑی واپس کرنے سے متعلق درخواست مسترد کردی، قومی احتساب بیورو نے لیگی رہنما کو 19فروری کیلئے بلاوا بھیج دیا ہے۔

لاہور کی انسداد منشیات عدالت نے رانا ثنا اللہ کی گاڑی واپس کرنے سے متعلق درخواست پر تحریری حکم جاری کردیا۔ خصوصی عدالت نے کہا کہ پراسیکیوشن کا الزام ہے ملزم گاڑی میں 15 کلو ہیروئن رکھ کر سفر کررہا تھا ، اے این ایف قانون کے مطابق گاڑی ملزم کو نہیں دی جا سکتی، رانا ثناءاللہ کی گاڑی مال مقدمے کے طور پر اے این ایف کے پاس موجود رہے گی۔

قومی احتساب بیورو نے نون لیگ کے رہنما رانا ثنا اللہ کو دوبارہ بلالیا ہے ، انھیں 19 فروری کو اہلخانہ کی جائیدادوں سے متعلق تفصیل ساتھ لانے کا حکم دیا گیا ہے ، نیب نے 2 جنوری کو جمع کرائے گئے اثاثہ جات پرفارما سے متعلق بھی وضاحت مانگی گئی ہے ، رانا ثنا اللہ سے کہا گیا ہے کہ جائیدادیں بنانے کیلئے آمدنی کے ذرائع کی تحریری وضاحت کریں۔ نیب نے پوچھا ہے کہ انہوں نے کاروبار کیسے شروع کیا؟ اس کیلئے سرمایہ کہاں سے آیا؟ انہوں نے اہل خانہ کو تحائف کی صورت میں کیا کیا دیا؟ جو تحائف دیئے اس کی رقم کہاں سے آئی؟

ٹرینڈنگ

مینو