ماریہ بی: ملازم نے کتنوں کا کورونا لگایا؟

کورونا سے متاثرہ ملازم کو اسپتال کے بجائے گاؤں بھیجنے پر گرفتار فیشن ڈیزائنر ماریہ بی کے شوہر طاہر سعید کو ضمانت پر رہائی مل گئی، ماریہ بی اور طاہر نے وزیراعظم عمران خان کا شکریہ ادا کیا ہے، پولیس کا کہنا کہ طاہر سعید کا ملازم عام بس سے اپنے گاؤں گیا تھا۔

مقبول فیشن ڈیزائنر ماریہ بی کے شوہر طاہر سعید نے ضمانت پر رہائی کے بعد اپنی اہلیہ کے ساتھ ویڈیو پیغام جاری کیا ہے، دونوں نے وزیراعظم عمران خان کا شکریہ ادا کیا اور بتایا کہ پولیس نے لاہور میں ان کی رہائش گاہ پر کس طرح چھاپہ مارا تھا۔

اس سے پہلے ماریہ بی کی ایک اور ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی ، اس میں ماریہ نے وزیراعظم سے اپنے شوہر کی رہائی کیلئے اپیل کی تھی۔

یاد رہے کہ ماریہ بی کے شوہر طاہر سعید نے گھریلو ملازم کو کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کے باوجود اسپتال میں داخل نہیں کرایا تھا ، پولیس نے دفعہ 144 کی خلاف ورزی اور مرض چھپانے کے الزام میں انھیں گرفتار کرلیا تھا ، طاہر سعید کو بعد میں ضمانت پر رہا کردیا گیا۔  پولیس حکام کا موقف ہے کہ طاہر سعید نے کورونا کے مریض اپنے ملازم کو اسپتال لے جانے کے بجائے وہاڑی بھیج دیا ، وہ عام بس سے وہاڑی پہنچا اور اپنے گاؤں کرم پور جا کر بھی لوگوں سے ملتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ سوشل میڈیا پر ماریہ بی اور ان کے شوہر کو تنقید کا سامنا ہے، اجمل جامی نے کیا کہا آئیں سنتے ہیں۔

سوشل میڈیا صارفین کا کہنا ہے کہ پاکستان میں امیروں اور غریبوں کیلئے ایک قانون ہونا چاہئے۔

اب حکام ان لوگوں تک پہنچنے کی کوشش کر رہے ہیں جن سے طاہر سعید کا ملازم ملتا رہا لیکن ان تمام افراد تک پہنچنا ناممکن ہے جو اس کے ساتھ بس میں سوار تھے۔

ٹرینڈنگ

مینو