محبوبہ پروفیسر لاک ڈاؤن کی نوکری کھاگئی

برطانیہ میں سائنٹیفیک ایڈوائزری گروپ فار ایمرجنسیز کے رکن پروفسیر نیل فرگوسن کو محبوبہ کے سبب سرکاری عہدے سے ہاتھ دھونے پڑگئے۔

وزیراعظم بورس جانسن کو لاک ڈاون کا مشورہ دینے والے سائنسدان نیل فرگوسن پروفیسر لاک ڈاؤن کے نام سے مشہور ہیں، انھوں نے خبردار کیا تھا کہ اگر برطانیہ میں پابندیاں نہ لگائی گئیں تو 5 لاکھ اموات ہوسکتی ہیں۔

51 برس کے پروفیسر صاحب برطانیہ بھر میں لاک ڈاون کا نفاذ کراکے خود میاں فصیحت بن گئے، انھوں نے شادی شدہ 38 سالہ محبوبہ انٹونیا اسٹاٹس کو لندن بھر کا سفر کرکے اپنے گھر آنے کی اجازت دے دی۔

انٹونیا اسٹاٹس اپنے شوہر اور 2 بچوں کے ساتھ جنوبی لندن میں رہتی ہیں ، وہ لاک ڈاؤن کے دوران کم سے کم 2 بار پروفیسر فرگوسن سے ملنے ان کے گھر آئیں۔

انٹونیا اسٹاٹس سے ملاقاتوں کا بھانڈا پھوٹا تو نیل فرگوسن کو استعفی دینا پڑگیا۔ پروفیسر نے اگرچہ غلطی تسلیم کی لیکن یہ بھی کہہ دیا کہ وہ سمجھتے تھے کورونا مرض سے صحت یابی کے بعد اب انھیں دوبارہ مرض نہیں ہوسکتا حالانکہ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی رائے اس سے مختلف ہے۔ انٹونیا اسٹاٹس سماجی طور پر فعال خاتون ہیں اور مختلف مظاہروں میں حصہ لے کر میڈیا کی زینت بنتی رہی ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو