نئی دہلی میں مقتولین کی تعداد 42 ہوگئی

بھارت میں شہریت کا متنازع قانون 69 افراد کی زندگیاں نگل گیا، صرف نئی دہلی میں قتل کئے گئے افراد کی تعداد 42 ہوچکی ہے۔

بھارتی میڈیا نے تصدیق کی ہے کہ 11 دسمبر 2019 کو شہریت کا قانون منظور کئے جانے کے بعد سے پرتشدد واقعات میں اضافہ ہوا، اس دوران آسام میں 6 اور کرناٹکا میں 2 افراد قتل کئے گئے جبکہ اترپردیش میں 19 شہریوں کی جان لی گئی۔

سب سے زیادہ ہلاکتیں نئی دہلی میں ہوئیں جہاں 42 افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔

اس دوران مساجد اور مسلمانوں کی املاک پر آر ایس ایس کے غندوں نے پولیس کی سرپرستی میں حملے کئے اور قتل و غارت گری کی۔

انڈونیشیا کی وزارت خارجہ نے بھارتی سفیر کو طلب کرکے مسلمانوں کی نسل کشی پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ انڈونیشیا کی حکومت نے قتل و غارت گری کی مذمت کرتے ہوئے اقلیتیوں کے تحفظ کا مطالبہ کیا ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو