پنجاب کابینہ نے ضمانت میں توسیع کی اپیل مسترد کردی

پنجاب کابینہ نے سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کی ضمانت میں توسیع کی درخواست مسترد کردی۔

وزیراعلی عثمان بزدار کی زیرصدارت کابینہ اجلاس میں نوازشریف کی میڈیکل رپورٹ پیش کی گئی، خصوصی کمیٹی نے نون لیگ کے قائد کی صحت سے متعلق  سفارشات پیش کیں ، اس کے بعد کابینہ نے ضمانت میں توسیع کی اجازت دینے سے انکار کردیا۔ کابینہ اراکین نے کہا کہ عدالت نے نوازشریف کو  علاج کیلئے 8 ہفتے دیئے تھے۔ نوازشریف کی جانب سے ایسی ٹھوس رپورٹ پیش نہیں کی گئیں جس سے ضمانت میں توسیع کا جواز بنتا ہو۔

بعد میں پریس کانفرنس کے دوران صوبائی وزیرقانون راجہ بشارت نے بتایا کہ میڈیکل بورڈ نے نوازشریف کی رپورٹس پر عدم اطمینان ظاہر کیا ہے ، معلوم نہیں نواز شریف کا آپریشن کب ہوگا، وہ 16 ہفتے بعد بھی کسی اسپتال میں داخل نہیں ہوئے ، انھوں نے بتایا کہ پنجاب حکومت نے نواز شریف کو اشتہاری قرار دینے کیلئے عدالت سے رجوع کرنا ہے اور وفاقی حکومت نواز شریف کی ضمانت سے متعلق عدالت کو آگاہ کرے گی۔ وزیرصحت یاسمین راشد نے بتایا کہ نوازشریف اسپتال میں داخل نہیں ہوئے اس کا مطلب ہے کوئی خطرہ نہیں۔

یاد رہے کہ میاں نوازشریف عدالت سے ضمانت کے بعد 19 نومبر 2019 کو علاج کیلئے لندن گئے تھے۔

ٹرینڈنگ

مینو