ٹیٹو بنوانے سے پہلے ڈریگن گرل کیسی تھی؟

اپنے پورے جسم پر ٹیٹو بنانے کی دھن میں 32 لاکھ روپے لٹانے والی نیلی آنکھوں والی وائٹ ڈریگن لڑکی نے اپنی پرانی تصاویر جاری کردی ہیں جس میں اس کا جسم اصل صورت میں دیکھا جاسکتا ہے۔

آسٹریلیا کے علاقے نیوساوتھ ویلز سے تعلق رکھنے ولی ایمبر لیوک کی عمر 24 سال ہے ۔ انسٹاگرام پر اس کے 87 ہزار فالورز ہیں۔ ان میں سے ایک نے اس سے پوچھا تھا کہ جسم پر 2 سو ٹیٹو بنوانے سے پہلے وہ کیسی نظر آتی تھی۔

وائٹ ڈریگن نے اچھا نظر آنے کیلئے نہ صرف جسم پر ٹیٹوز بنوائے بلکہ ٹھوڑی ، گالوں ، ہونٹوں اور کانوں تک میں فلرز بھی امپلانٹ کرائے ہیں۔

وائٹ ڈریگن نے اپنی والدہ کے ساتھ تصویر انسٹا گرام پر پوسٹ کی ہے ، اس میں وہ نیلا لباس پہنے ہوئے ہے اور جسم پر ٹیٹو کا ایک بھی نشان نہیں ہے۔

وائٹ ڈریگن نے پچھلے برس 40 منٹ کا ایک ایسا خطرناک پروسیجر بھی کرایا تھا جس سے اس کی آنکھیں نیلی نظر آتی ہیں۔ ایمبر نے تسلیم کیا ہے کہ آئی بال کو رنگین کرانا سب سے زیادہ خطرناک عمل تھا ، اس دوران اسے ایسے لگا جیسے کسی نے شیشے اس کی آنکھوں میں مل دیئے ہیں اور ہر آنکھ میں یہ عمل 4 بار کیا گیا۔ اس کے بعد وہ 3 ہفتوں تک بینائی سے محروم رہی تھی۔ اب اس نے ایسا کوئی بھی پروسیجر کرانے سے توبہ کرلی ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو