پاکستان اور بھارت میں مذاکرات ہونے چاہئیں،انتونیو گوتریس

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتریس نے بھارت پر مسئلہ کشمیر حل کرنے کیلئے پاکستان کے ساتھ مذاکرات پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ مقبوضہ وادی میں انسانی حقوق کا احترام کیا جانا چاہئے۔

اسلام آباد میں تقریب سے خطاب اور بعد میں سوالوں کا جواب دیتے ہوئے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ مسئلہ کشمیر مذاکرات سے حل ہونا چاہئے، انسانی حقوق کمیشن کی 2 رپورٹس نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی صورتحال واضح کردی ہے، مقبوضہ وادی میں انسانی حقوق کا ہر صورت احترام کیا جانا چاہئے۔

انتونیو گوتریس نے ایک سوال پر بتایا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان آبی معاہدہ موجود ہے اور عالمی بینک ضامن ہے، پانی ہتھیار نہیں بلکہ امن کا ضامن ہونا چاہئے، سیکریٹری جنرل کا کہنا تھا کہ ماحولیاتی تبدیلیوں کے باعث قدرتی آفات ہوئیں اور پاکستان میں 10 ہزار افراد ہلاک ہوئے۔ عالمی کوششیں مقاصد کے حصول میں کافی نہیں، پاکستان میں ترقیاتی اہداف کو موسمیاتی تبدیلیوں کے اثرات سے خطرات کا سامنا ہوسکتا ہے۔

انھوں نے کلین اینڈ گرین پاکستان منصوبے کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ ماحولیاتی تبدیلیوں کے اثرات سے کوئی ملک محفوظ نہیں اور دنیا کو ہنگامی صورتحال کا سامنا ہے۔ سیکریٹری جنرل نے اقوام متحدہ میں وزیراعظم عمران خان کے خطاب کو پراثر قرار دیا اور کہا کہ کامیاب جوان پروگرام بڑی کامیابی ہے ، یہ ایک کروڑ نوجوانوں کو روزگار دینے کا پروگرام ہے۔

انتونیو گوتریس سے افغان پناہ گزینوں کے وفد نے بھی اسلام آباد میں ملاقات کی ، وفد میں افغانستان ، یمن اور تاجکستان کے پناہ گزین شامل تھے ، انھوں نے پاکستان میں تعلیم اور کاروبار سے متعلق اپنے تجربات کا اظہار کیا۔ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ پاکستان مہمان نواز ملک ہے اور طویل عرصے سے افغان پناہ گزینوں کی مہمان نوازی کر رہا ہے۔

اس سے پہلے انتونیو گوتریس 4 روزہ دورے پر پاکستان پہنچے تو اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم اور ڈائریکٹر جنرل اقوام متحدہ فرخ اقبال نے ان کا استقبال کیا۔

انتونیو گوتریس نے آمد سے پہلے ٹویٹ میں کہا تھا کہ عالمی امن کی کوششوں میں پاکستان کا اہم کردار ہے اور دورہ پاکستان کا مقصد امن کیلئے خدمات پر پاکستانی عوام کا شکریہ ادا کرنا ہے۔

انتونیو گوتریس صدر عارف علوی اور وزیراعظم عمران خان سے ملاقاتیں کریں گے۔ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل لاہور میں بادشاہی مسجد، شاہی قلعہ اور پھر گوردوارہ کرتارپور صاحب بھی جائیں گے۔

ٹرینڈنگ

مینو