پردے کے آگے شبلی اور پیچھے باجوہ

وزیر ریلوے شیخ رشید وزیراطلاعات کا نام بھول گئے، کہتے ہیں فردوس عاشق اعوان اب میڈیا پر نظر آیا کریں گی کیونکہ میڈیا کی عادت اتنی جلدی نہیں جاتی.

لاہور میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ وہ محدود ٹرینیں چلانے جارہے ہیں ، وزیراعظم جب حکم دیں گے تو ٹرینیں چلادیں گے اور ریلوے سے کسی کو نہیں نکالا جائے گا۔

وزیرریلوے نے فردوس عاشق اعوان پر بھی طنز کیا اور کہا کہ میڈیا کی عادت اتنی جلد نہیں جاتی ، اب فردوش عاشق اعوان نوازشریف کی طرح کہیں گی مجھے کیوں نکالا۔

شیخ رشید نے بتایا کہ نیب رمضان کے بعد ٹارزن بننے جارہا ہے ، قومی احتساب بیورو دوطرفہ ٹارزن بنے گا ، روزوں کے بعد ٹارزن کی واپسی ہوگی، دونوں طرف کے قلندر اندر جاسکتے ہیں لیکن میرے موکل نے نام نہیں بتائے۔ انھوں نے دعویٰ کیا کہ حکومت اور اپوزیشن کے مذاکرات ہورہے ہیں، نون لیگ نیب آرڈیننس میں جو ترامیم چاہتی ہے وہ ممکن نہیں۔ پیپلزپارٹی اور نون لیگ چاہتی ہیں نیب قانون بدل دیں پھر چاہے بیسویں ترمیم بھی کرالیں، شہباز شریف باہر جانے کے جتن کر رہے ہیں۔

شیخ رشید گفتگو کے دوران وزیر اطلاعات کا نام بھول گئے ، صحافیوں سے پوچھ لیا کیا نام ہے ، میڈیا نمائندوں نے بتایا تو بولے کہ وزارت اطلاعات میں بہترین ٹیم آگئی ، پردے کے آگے شبلی فراز ہیں اور پیچھے لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ عاصم سلیم باجوہ۔ ، انھوں نے کہا کہ پاکستان میں کوئی لاک ڈاؤن نہیں ، مذاق ہورہا ہے ، بلاول بھٹو سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ عمران خان سے حکومت نہیں چل رہی تو بلاول کی جھولی میں ڈال دے ؟ کیا پدی کیا پدی کا شوربا۔

ٹرینڈنگ

مینو