پاک افغان سرحد پر بھی خصوصی انتظامات

کورونا وائرس سے ملک کو محفوظ رکھنے کیلئے پاک ایران سرحد بند ہونے کے بعد اب کوئٹہ تفتان ٹرین سروس معطل کردی گئی ، مختلف علاقوں سے ایران جانے کے خواہشمند زائرین کو بلوچستان میں روک کر واپس بھیجا جارہا ہے۔ افغانستان سے ملحقہ سرحدی علاقوں میں بھی حفاظتی انتظامات کئے جارہے ہیں۔

پاک ایران بارڈر بند ہوئے چوتھا روز ہوگیا اور کوئٹہ تفتان ٹرین سروس بند کرنے کا اعلان کردیا گیا ہے۔

تفتان میں ٹینٹ اسپتال قائم کردیا گیا ہے ، لوگوں کیلئے بستر ، ماسک اور کھانے پینے کا انتظام کیا گیا ہے جبکہ 270 سے زائد زائرین کی اسکریننگ کا عمل بھی جاری ہے۔

امکان ہے کہ جلد ہی مزید ہزاروں زائرین اس خیمہ بستی میں پہنچ جائیں گے۔ حکومت نے بلوچستان کے تمام اضلاع میں خصوصی وارڈز بھی قائم کردیئے ہیں تاکہ ہنگامی صورتحال سے نمٹا جاسکے۔

تفتان سے 306 ایرانی ڈرائیورز اور تاجروں کو وطن جانے کی اجازت دے دی گئی ہے جبکہ سرحد کے اس پار درجنوں پاکستان وطن واپسی کے منتظر ہیں۔

تفتان کے راستے ایران جانے کے خواہشمند افراد کو روکنے کیلئے شیرانی میں چوکی قائم کردی گئی ہے۔

ملک کے مختلف علاقوں سے یہاں پہنچنے والے افراد کو کورونا وائرس کے بارے میں آگاہ کرکے واپس بھیجنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

ایران کے بعد اب افغان سرحد پر بھی خصوصی انتظامات کئے گئے ہیں ، طبی عملہ پاک افغان باب دوستی پر لوگوں کی اسکریننگ کر رہا ہے۔

طورخم بارڈر سے آنے والوں کا بھی چیک اپ کیا جارہا ہے ، پاک افغان دوستی اسپتال طورخم، لنڈی کوتل اور جمرود کے اسپتالوں مں آئسولیشن وارڈز قائم کردیئے گئے ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو