اٹلی میں 1266 اور امریکا میں 50 اموات

دنیا بھر میں کورونا سے ہلاک افراد کی تعداد 5 ہزار 438 ہوچکی ہے ، چین میں مزید 13 ، جنوبی کوریا میں 5 ، امریکا میں ایک ، فلپائن میں 3 اموات ہوئی ہیں، اٹلی میں ابتک 1266 ، فرانس میں 79 ، برطانیہ میں 11 اور امریکا میں 50 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

ایران میں مزید اموات ہوئی ہیں اور مریضوں کی تعداد 11 ہزار 3 سو سے زائد ہوچکی ہے جبکہ تھائی لینڈ میں سگریٹ اور مشروب شیئر کرنے سے 13 دوست کورونا میں مبتلا ہوگئے ہیں۔

چین نے کورونا کی وبا پر قابو پالیا ، نہ صرف اموات کی تعداد میں نمایاں کمی ہوئی بلکہ مریض بھی گھٹنے لگے اور رفتہ رفتہ زندگی معمول پر آنے لگی ہے۔ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق اس وقت یورپ کی صورتحال چین سے بدتر ہے۔

اٹلی کے اسپتال مریضوں سے بھر گئے ہیں، ایک ہی روز میں ڈھائی سو اموات اور اب تک ساڑھے 12 سو افراد کی ہلاکت کے بعد لوگوں نے گھروں سے نکلنا چھوڑ دیا ہے۔

اسپین کی صورتحال بھی کچھ مختلف نہیں، یہاں ایک سو 30 سے زائد ہلاکتیں ہوچکی ہیں اور 5 ہزار سے زائد مریض رپورٹ ہوئے ہیں۔ ملک میں 15 دن کیلئے ایمرجنسی نافذ کی گئی ہے۔

فرانس کے دارالحکومت کا لوور میوزیم اور ایفل ٹاور بند کئے جاچکے ہیں ، ضعیف افراد کو گھروں میں رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ نیدر لینڈز اور سوئٹزر لینڈ میں 10 سے زائد ہلاکتیں ہوئی ہیں۔ ڈنمارک اور پولینڈ نے سیاحوں کی آمد پر پابندی لگائی ہے جبکہ تعلیمی ادارے اور دکانیں بند کردی گئی ہیں۔

اسکاٹ لینڈ میں پہلی ہلاکت ہوئی ہے اور برطانیہ میں اموات 10 سے بڑھ گئی ہیں، مریضوں میں ایسا نومولود بھی شامل ہے جس کی والدہ نمونیا کے شبہ میں اسپتال لائی گئی تھی۔

برطانیہ کے ایک وزیر نے صرف ویلز میں 20 ہزار اموات کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔ ایسے میں وزیراعظم بورس جانسن  نے یوٹرن لیتے ہوئے اگلے ویک اینڈ سے اجتماعات پر پابندی لگا دی ہے۔ ایمرجنسی کی خلاف ورزی پر کورونا مریضوں کو گرفتار کرنے کا حکم بھی دے دیا گیا ہے۔

آسٹریلوی وزیر داخلہ میں بھی بیماری کی تصدیق ہوئی ہے ، انھوں نے چند روز پہلے امریکی صدر کی صاحبزادی ایوانکا ٹرمپ سے ملاقات کی تھی ، اقوام متحدہ کے ہیڈکوارٹرز میں فلپائنی سفیر بھی بیماروں میں شامل ہیں۔

امریکی میں نئی ہلاکت کے بعد اموات کی تعداد 50 ہوگئی ہے اور 2 ہزار 3 سو سے زائد مریض زیر علاج ہیں۔

کینیڈا میں 2 اموات ہوئی ہیں اور مریضوں کی تعداد 200 ہوچکی ہے ، ان میں وزیراعظم کی اہلیہ بھی شامل ہیں، وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے عوام سے غیرضروری طور پر بیرون ملک نہ جانے کی اپیل کی ہے اور بیرون ملک سے شہریوں کی آمد کم کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو