کورونا ازدواجی تعلق سے بھی پھیلتا ہے؟

کورونا وائرس کے مریضوں سے ہاتھ ملانے یا ان کے زیر استعمال اشیا چھونے کے بعد اپنا ہاتھ ناک، منہ اور آنکھوں پر لگانے سے وبا پھیلنے کا خدشہ ظاہر کیا جاتا رہا ہے مگر اب نئی تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ کورونا وائرس ازدواجی تعلق سے بھی پھیل سکتا ہے۔

چین میں سائنسدانوں نے کورونا مریضوں کے نطفے میں وائرس کی موجودگی کا انکشاف کیا ہے۔ محقیقن نے 38 ایسے مردوں کے نطفے کو چیک کیا جن کا کورونا ٹیسٹ مثبت آیا تھا۔ ان میں سے بعض صحت یاب ہوگئے تھے جبکہ دیگر تاحال بیماری میں مبتلا تھے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ہر 6 میں سے ایک شخص کے نطفے میں کورونا وائرس موجود تھا۔ ان میں وہ لوگ بھی شامل تھے جنھیں صحت مند قرار دیا جاچکا تھا۔

انفیکشئیس بیماریوں کے ماہرین کا کہنا ہے کہ اس چیز کا سامنے آنا حیران کن نہیں کیونکہ زکا اور ایبولا وائرس بھی نطفے میں موجود پائے گئے ہیں۔ چینی تحقیق سے یہ بات تو ثابت نہیں ہوتی کہ کورونا وائرس ازدواجی تعلق سے دیگر افراد کو منتقل بھی ہوتا ہے یا نہیں تاہم یہ مفروضہ پیش کیا گیا ہے کہ ایسا ہونا ناممکن نہیں۔

ہینان کے میونسپل اسپتال کی اس تحقیق کے بعد ماہرین کا کہنا ہے کہ بیماری کے دوران اور صحت یاب ہونے کے کچھ عرصے بعد تک ازدواجی تعلق قائم نہ کرنا ہی زیادہ محفوظ ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو