بدترین حالات میں 6کروڑ 80 لاکھ اموات کا خدشہ

آسٹریلوی ماہرین نے کہا ہے کہ کورونا نے وبائی صورت اختیار کی تو اموات کی تعداد ڈیڑھ کروڑ تک پہنچ سکتی ہے۔ وبا انتہا کو پہنچی تو 6 کروڑ 80 لاکھ افراد لقمہ اجل بن سکتے ہیں۔

آسٹریلوی محققین وارک مکیبن اور روشن فرنانڈو نے اپنے مقالے میں خبردار کیا کہ کورونا نے وبائی صورتحال اختیار کی تو چین اور بھارت میں لاکھوں افراد ہلاک ہوسکتے ہیں جبکہ امریکا میں 2 لاکھ 30 ہزار اموات ہوسکتی ہیں۔ امریکا میں ہلاکتوں کا جائزہ کورونا اور عام وبائی زکام کا موازنہ کرکے پیش کیا گیا ہے، تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ عام وبائی زکام کے باعث امریکا میں ہر سال تقریبا 55 ہزار افراد ہلاک ہوجاتےہیں۔

تحقیق کے مطابق برطانیہ میں 64 ہزار ، جرمنی میں 79 ہزار اور فرانس میں 60 ہزار افراد ہلاک ہوسکتے ہیں۔ اٹلی اور جنوبی کوریا میں بھی ہزاروں اموات کا خدشہ ہے۔

آسٹریلوی محققین کے مطابق کورونا کی وبا انتہا کو پہنچی تو 6 کروڑ 80 لاکھ افراد کے زندگی سے محروم ہونے کا خدشہ ہے ، چین میں ایک کروڑ بیس لاکھ ، امریکا میں 11 لاکھ ، برطانیہ میں 2 لاکھ 90 ہزار اور روس میں ایک لاکھ افراد زندگی کی بازی ہار سکتے ہیں۔ کورونا جرمنی اور فرانس میں بھی ہزاروں افراد کی زندگیاں چھین سکتا ہے۔

تحقیق کے مطابق وبا درمیانے درجے کی ہوئی تو 3 کروڑ 80 لاکھ افراد موت کے منہ میں جاسکتے ہیں۔ یاد رہے کہ عالمی ادارہ صحت نے کورونا سے اتنے بڑے پیمانے پر اموات کا خدشہ ظاہر نہیں کیا ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو