ہسپانوی وزیراعظم کی بیوی کو کورونا کس نے لگایا؟

کورونا وائرس سے یورپی ممالک میں  صورتحال بے قابو ہوگئی۔ اسپین میں 196 افراد موت کی آغوش میں جاچکے ہیں ، اٹلی کے بعد اسپین نے لاک ڈاون کردیا ہے۔ فرانس میں 91اموات ہوچکی ہیں اور تفریحی مقامات، ریستوران، دکانیں، سینما ،نائٹ کلب اور کیفے غیرمعینہ مدت کیلئے بند کردیے گئے ہیں۔

اسپین میں تمام تفریحی مقامات اور ریستوران بند کردیئے گئے ہیں اور شہریوں کو غیر ضروری سفر سے گریز کی ہدایت کی گئی ہے۔

ہسپانوی وزیراعظم نے لوگوں سے کہا ہے کہ وہ صرف ملازمت پر جانے یا سامان کی خریداری کیلئے گھروں سے نکلیں۔

، اسپین میں پھنسے سیاح اور طلبہ آبائی وطن لوٹنے کیلئے شدید مشکلات سے دوچار ہیں۔

خود ہسپانوی وزیراعظم پیڈرو سانچز کی جواں سال اہلیہ بگونا گومیز بھی کورونا کی شکار ہوگئی ہیں تاہم وہ زیادہ بیمار نہیں۔

وزیراعظم کی اہلیہ کے بیمار پڑنے سے پہلے  ایکویلٹی منسٹر اور ریجنل افئیرز منسٹر بھی کورونا میں مبتلا ہوچکے ہیں۔

فرانس میں 90 سے زائد اموات ہوئی ہیں  ایفل ٹاور سمیت تفریحی مقامات، ریستوران، دکانیں، سینما ،نائٹ کلب اور کیفے ہفتے کی رات سے غیرمعینہ مدت کیلئے بند کردیئے گئے ہیں تاہم سپرمارکیٹس ، فارمیسی اور پیٹرول اسٹیشن کھلے رہیں گے۔

فرانس کے وزیراعظم فلپے نے کورونا وبا کو صدی کا سب سے بڑا طبی بحران قرار دیا ہے اور شہریوں کو ملک کے اندر بھی غیرضروری سفر سے گریز کی ہدایت کی ہے۔ ڈنمارک میں پہلی موت کے بعد لوگ خوفزدہ ہیں، سوئٹزرلینڈ، بیلجیم، ناروے،سوئیڈن، نیدرلینڈز ، آئرلینڈ ، یونان ، سلوینیا اور پولینڈ میں بھی اموات بڑھی ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو