ہینو:گھر سے لاش اور اعترافی ویڈیو برآمد

جرمنی کے شہر ہینو میں مسلح شخص نے دو شیشہ بار میں گولیاں برسا کر 9 افراد کو ہلاک کردیا۔ فائرنگ سے 5 افراد شدید زخمی ہوئے جو اسپتال میں زیرعلاج ہیں۔ ملزم توبیاز ریتھجن کی لاشیں گھر سے مل گئی ہیں جبکہ اعترافی نوٹ اور ویڈیو بھی برآمد ہوئی ہے۔

دائیں بازو کے حملہ آور کے ساتھ ایک خاتون کی لاش ملی ہے جس کے بارے میں کہا جارہا ہے کہ وہ اس کی ماں ہے، جرمن اخبار کے مطابق حملہ آور توبیاز نے ویڈیو اور ایک خط چھوڑا جس میں جرم کا اعتراف کیا گیا ہے۔ ویڈیو میں اس کا کہنا تھا کہ جرمنی میں کچھ لوگوں کو ختم کردینا چاہئے کیونکہ ان کا انخلا نہیں ہو پا رہا۔

اس سے پہلے ہینو کے دو شیشہ بار میں فائرنگ کی گئی تھی، عینی شاہدین کا کہنا تھا کہ ایک حملہ آور بیل بجا کر مڈنائٹ شیشہ بار میں داخل ہوا اور گولیاں برسانا شروع کردیں، ملزم  گہرے رنگ کی کار میں فرار ہوا تھا۔

مقامی وقت کے مطابق یہ واقعہ رات 10 بجے یعنی پاکستانی وقت کے مطابق رات 2 بجے پیش آیا۔ کچھ ہی دیر بعد ایرینا بار میں لوگوں کو نشانہ بنایا گیا۔

جسم کے مختلف حصوں پر گولیاں لگنے سے کئی افراد زخمی بھی ہوئے جنہیں قریبی اسپتالوں میں منتقل کیا گیا۔

جرمن میڈیا کے مطابق ہلاک اور زخمی افراد ترک یا کرد ہیں۔

حملے میں سلور رنگ کی ایک مرسیڈیز کار بھی نشانہ بنی جس کے شیشے ٹوٹ گئے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ انہوں نے کم سے کم 8 گولیاں چلنے کی آواز سنی، جتنی دیر میں پولیس آئی، ملزم فرار ہوگیا۔

پولیس نے حملہ آور توبیاز کے والد کو بھی گھر سے حراست میں لیا البتہ حکام کا کہنا ہے کہ اس کا فائرنگ سے کوئی لینا دینا نہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو