معاہدے پر عمل کریں گے، طالبان

امریکا اور طالبان نے دوحہ میں امن معاہدے پر دستخط کردیئے ہیں۔معاہدے پر طالبان رہنما ملا عبدلغنی برادر اور امریکا کے خصوصی نمائندے زلمے خلیل زاد نے دستخط کئے۔

معاہدے کے تحت اتحادی افواج 14 ماہ میں افغانستان سے نکل جائیں گی ، طالبان نے افغان سرزمین القاعدہ اور دیگر دہشت گرد تنظیموں کے زیر استعمال نہ آنے کی ضمانت دی ہے۔ مشترکہ اعلامیئے میں کہا گیا ہے کہ یہ ایگریمنٹ طالبان کی جانب سے امن معاہدے کی پاسداری سے مشروط ہوگا۔

امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے دوحہ میں امن معاہدے کی تقریب سے خطاب کرتے  ہوئے کہا کہ امریکا اور طالبان طویل تنازعات ختم کررہے ہیں، انھوں نے تاریخی مذاکرات کی میزبانی پر امیر قطر سے اظہار تشکر کیا ہے۔  مائیک پومپیو نے کہا ہے کہ امن کے بعد افغانوں کو اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کرنا ہے۔ طالبان کے ساتھ معاہدہ افغان امن کی جانب قدم ہے۔

افغان طالبان رہنما ملا عبدالغنی برادر نے امن معاہدے کیلئے کردار ادا کرنے پر پاکستان ک شکریہ ادا کیا، انھوں نے تمام گروپوں سے افغانستان میں اسلامی حکومت کے قیام کیلئے متحد ہونے کی اپیل کی۔ ملا عبدالغنی برادر نے کہا کہ طالبان تمام ممالک سے بہترین تعلقات چاہتے ہیں، انھوں نے افغانستان اور افغان عوام کی ترقی کاعزم کیا اور بتایا کہ امریکا کے ساتھ معاہدے پر عملدرآمد کیا جائے گا۔

ٹرینڈنگ

مینو