کراچی : سڑکوں پر کشتیاں، حادثات میں 14 اموات

اعجاز امتیاز، منصور شیخ

کراچی میں تیسرے روز بھی کہیں تیز اور کہیں ہلکی بارش کا سلسلہ جاری ہے جبکہ 3 روز کے دوران حادثات میں جاں بحق افراد کی تعداد 14 ہوگئی ہے۔

شہر قائد میں مسلسل تیسرے روز بارش نے شہریوں کی مشکلات بڑھادی ہیں، نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہے اور گلیوں میں کچرے کے ڈھیر لگ گئے ہیں، گلبہار میں بارش کا پانی گھروں میں داخل ہوگیا۔

سندھ حکومت ، شہری انتظامیہ ، پاک فوج اور فلاحی ادارے امدادی کاموں میں مصروف ہیں اور سڑکوں پر کشتیاں چلانے کی نوبت آگئی ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق  کراچی میں اتوار کو بھی بوندا باندی کا امکان ہے۔

برسات نے کے الیکٹرک کو بجلی کی فراہمی معطل کرنے کا جواز فراہم کردیا، سرجانی ٹاؤن، خدا کی بستی ، اورنگی ٹاؤن، کورنگی ، لانڈھی ، پی ای سی ایچ ایس ، اولڈ سٹی ایریا ، گلشن اقبال ، گلستان جوہر اور ایف بی ایریا میں بجلی کی فراہمی متاثر ہوئی۔

شہر میں 3 روز سے جاری بارش کے دوران کرنٹ لگنے سے 10 افراد جاں بحق ہوئے، اموات گلشن اقبال بلاک 13 ڈی ، گلستان جوہر ، کٹی پہاڑی ، میوہ شاہ قبرستان ، لانڈھی نمبر 4 ، سٹی کورٹ، سول اسپتال ، ملیر ماڈل کالونی ، اتحاد ٹاؤن، نارتھ کراچی سیکٹر 2 میں ہوئیں۔ سرجانی ندی اور بنارس میٹرو سنیما کے قریب ندی میں ڈوب کر 2 بچے جاں بحق ہوئے، لیاری جہان آباد میں چھت گرنے سے 2 افراد کی جان گئی۔

حیدر آباد کی نورانی بستی ، نیوکلاتھ مارکیٹ روڈ، شاہ مکی روڈ، لطیف آباد اور فقیر کاپڑ چوک سمیت مختلف علاقوں میں بارش کا پانی جمع ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو