طیارہ حادثہ: 97 اموات، تدفین کا آغاز

مناہل تنویر

کراچی میں طیارہ حادثے کی تحقیقات جاری ہیں، بدقسمت طیارے میں موجود 99 افراد میں سے 97 جاں بحق ہوئے، 21 لاشیں ورثا کے حوالے کردی گئیں اور کئی کی تدفین کردی گئی ہے۔

ماڈل کالونی کے علاقے جناح گارڈن میں اے 320 ایئربس گرنے سے جاں بحق افراد کی لاشیں اسپتالوں سے ایدھی اور چھیپا کے سرد خانوں میں منتقل کردی گئی ہیں۔ ان میں 89 مسافر اور عملے کے 8 افراد شامل ہیں۔

میتوں کی منتقلی سے پہلے ڈی این اے ٹیسٹ کئے گئے تھے تاکہ شناخت ہوسکے ، 19 مرحومین کی شناخت جمعہ کو ہی کرلی گئی تھی۔

طیارہ مکانوں پر گرنے سے 100 افراد زخمی ہوئے جن میں بچے بھی شامل تھے ، انھیں ریسکیو کرنے میں سیکیورٹی اہلکار پیش پیش رہے۔

خواتین سمیت کئی معمر افراد کو بمشکل نکال کر اسپتال منتقل کیا گیا تھا تاہم ان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

پی آئی اے کا طیارہ گرنے سے 25 گھروں کو نقصان پہنچا تھا جنھیں اب کلیئر قرار دے دیا گیا ہے۔ ان گھروں کے مکینوں کو رات عزیزوں کے ہاں گزارنا پڑی۔

متاثرہ علاقے کی گلیوں میں طیارے کا ملبہ بکھر گیا تھا جسے اٹھانے کا کام جاری ہے۔ حکام اس بات کا بھی تخمینہ لگا رہے ہیں کہ آبادی پر طیارہ گرنے سے لوگوں کو مالی طور پر کتنا نقصان ہوا۔

طیارہ گرنے سے مکانوں کے ساتھ ساتھ کئی گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچا تھا اور تنگ گلیوں کے باعث امدادی کارروائیوں میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

طیارے کے بلیک باکس کا اہم حصہ کوئیک ایکسس ریکارڈر تلاش کرکے سول ایوی ایشن حکام کے حوالے کردیا گیا ہے۔ پی کے 8303 جمعہ کی دوپہر تقریبا 2 بج کر 37 منٹ پر تباہ ہوا تھا۔

ٹرینڈنگ

مینو