افغانستان: 400 طالبان رہا کرنے کی منظوری

افغان لویہ جرگے نے سنگین جرائم میں ملوث 400 طالبان قیدی رہا کرنے کی منظوری دے دی۔

لویہ جرگہ کے مطابق رہائی کا فیصلہ طالبان اور حکومت کے درمیان مذاکرات میں حائل رکاوٹ ختم کرنے کیلئے کیا گیا۔ 3 روزہ جرگے کے اختتام پر قیدی رہا کرنے کی قرارداد منظور کرتے ہوئے طالبان سے مذاکرات کے آغاز کی منظوری بھی دے دی گئی۔

افغان صدر اشرف غنی نے کہا ہے کہ لویہ جرگہ کی منظوری کے بغیر قیدیوں کی رہائی ان کے اختیار سے باہر تھی۔

برطانوی میڈیا کے مطابق جن طالبان کو رہا کرنے کا حکم دیا گیا ہے ان میں سے کئی نہ صرف افغانوں بلکہ غیرملکیوں پر بھی حملوں میں ملوث ہیں۔

اس سے پہلے امریکا نے اعلان کیا تھا کہ افغانستان میں نومبر تک اس کے فوجیوں کی تعداد 5 ہزار سے کم ہوجائے گی اور دیگر کا انخلا مکمل کرلیا جائے گا۔

امریکی فورسز نے 2001 میں افغانستان کی طالبان حکومت ختم کردی تھی جس کے بعد سے ملک خانہ جنگی کا شکار تھا، طالبان اور امریکا نے اس سال کے آغاز میں 19 برس بعد امن معاہدہ کیا تھا۔

ٹرینڈنگ

مینو