آذربائیجان : فتح کا جشن، پاکستان پاکستان کے نعرے

آذربائیجان نے آرمینیا سے نگورنو کاراباخ کے تنازع پر فتح حاصل کرلی، روس کی مدد سے دونوں ممالک نے امن معاہدہ کرلیا جس کے بعد فاتح ملک میں جشن منایا جارہا ہے۔

6 ہفتے کی جنگ ختم ہوئی اور آذربائیجان کے صدر الہام علی یوف ، آرمینا کے وزیراعظم نکول پشنیان اور روسی صدر ولادیمیر پیوٹن  نے امن معاہدے پر دستخط کردیئے۔

آذربائیجان کے صدر نے فتح کا اعلان کیا تو عوام سڑکوں پر نکل آئے اور جشن منانا شروع کردیا گیا۔

فتح کی خوشی میں سرشار نوجوان جگہ جگہ رقص کرتے نظر آئے۔

آزربائی جان والے فتح کے جشن میں پاکستان کو نہ بھولے، مختلف علاقے پاکستان زندہ باد کے نعروں سے گونجتے رہے۔

آرمینیا کے وزیر اعظم نے شکست تسلیم کرلی، انھوں نے معاہدے کو تکلیف دہ قرار دیا اور کہا کہ یہ اقدام فوجی وسائل ختم ہونے کی وجہ سے کیا گیا۔

انھوں نے بتایا کہ معاہدہ فوج کے مشورے پر کیا گیا کیونکہ فوجی ایک ماہ سے لڑرہے تھے اور انھیں آرام کی ضرورت تھی۔

معاہدے کے مطابق آرمینیا کے قبضے سے لئے گئے علاقے آذربائیجان کے پاس رہیں گے، دفاعی اعتبار سے انتہائی اہم علاقہ شوشا بھی آذربائیجان کے پاس رہے گا، روسی امن دستے کے 1960 اہلکار کاراباخ بھیجے گئے ہیں ، یہ فوجی آرمینیا کو کاراباخ کے دارالحکومت خان کندی سے ملانے والی راہداری میں 5 سال رہیں گے ، آذربائیجان کے صدر کا کہنا ہے کہ ترکی بھی اس علاقے میں قیام امن کیلئے کردار ادا کرے گا۔

ٹرینڈنگ

مینو