ارب پتی مشیر اور معاونین، 4کی دوہری شہریت

محمد عثمان

معاونین خصوصی اور مشیروں کے اثاثوں کی تفصیلات جاری کردی گئیں، 4 معاونین خصوصی دوہری شہریت کے حامل ہیں۔

کابینہ کے 19 غیر منتخب ارکان میں سے وزیراعظم کے 4 معاونین خصوصی  ندیم بابر (امریکا) ، زلفی بخاری (برطانیہ) شہزاد قاسم (امریکا) اور تانیہ ایندروس (کینیڈا) کے پاس دہری شہریت ہے۔ شہباز گل (امریکا ، معید یوسف (امریکا) ، ندیم افضل گوندل (کینیڈا) اور تانیہ ایندروس کے پاس سنگارپور کی بھی رہائش ہے۔

معاون خصوصی برائے ڈیجیٹل پاکستان تانیہ ایدروس 71 کروڑ روپے سے زائد اثاثوں کی مالک ہیں۔

معاون خصوصی برائے نیشنل سیکیورٹی ڈویژن معید یوسف ارب پتی ہیں اور امریکی رہائش بھی رکھتے ہیں۔ انھوں نے دوہری شہریت کی تردید کی ہے، معاون خصوصی ندیم بابر کے پاس امریکی شہریت ہے اور ان کے اثاثوں کی مالیت 2 ارب 75 کروڑ 28 لاکھ روپے ہے۔

معاون خصوصی اوورسیز زلفی بخاری برطانوی شہریت رکھتے ہیں، وہ پاکستان میں 1300 کنال کے مالک ہیں، ان کے اسلام آباد میں 34 کنال کے پلاٹس اور لندن میں 48 لاکھ 50 ہزار پاؤنڈ کی جائیداد ہے جبکہ ان کے پاس بیرون ملک 5 کمپنیز کے شیئرز بھی ہیں۔ ان کے بیرون ملک بینکوں میں 17 لاکھ پاونڈ موجود ہیں، زلفی بخاری کی اہلیہ کے پاس 5 لاکھ پاونڈ کا سونا ہے جبکہ بینکوں میں 24 لاکھ روپے رکھے ہیں۔

معاون خصوصی ندیم افضل گوندل (چن) کے پاس کینیڈا کی بھی رہائشی ہے، چیئرمین سی پیک اتھارٹی اور معاون خصوصی عاصم سلیم باجوہ کے پاس 16 کروڑ 10 لاکھ روپے کے اثاثے ہیں، وہ 7 کروڑ روپے کے فارم ہاوس ، کراچی، لاہور اور اسلام آباد میں 5 پلاٹس کے مالک ہیں جبکہ ان کی رحیم یار خان اور بہاولپور میں 65 ایکڑ اراضی بھی ہے۔

معاون خصوصی شہزاد اکبر کے اثاثوں کی مالیت 7 کروڑ 23 لاکھ سے زائد ہے۔ معاون خصوصی شہباز گل 11 کروڑ 85 لاکھ روپے کے مالک ہیں۔ ان کے ذمے 2 کروڑ 42 لاکھ کے واجبات ہیں۔ موجودہ اثاثوں کی مالیت 9 کروڑ 44 لاکھ روپے ہے۔ وہ ملک میں ایک پلاٹ، فارم ہاؤس اور بیرون ملک ایک گھر کے مالک ہیں۔ شہباز گل کا بھی کہنا ہے کہ ان کے پاس کسی دوسرے ملک کی شہریت نہیں۔

مشیر موسمیاتی تبدیلی ملک امین اسلم نے اہلیہ کے نام پر 50 لاکھ کی سرمایہ کاری شئیرز کی مد میں کررکھی ہے، اہلیہ کے نام پر92 لاکھ روپے کی 3 گاڑیاں ہیں۔ امین اسلم نے ایک کروڑ 47 لاکھ روپے کا بینک بیلنس بھی اثاثوں میں ظاہر کیا ہے۔

معاون خصوصی صحت ظفر مرزا 5 کروڑ 70 لاکھ روپے کے مالک ہیں، ان کے پاس 2 کروڑ روپے کا گھر اور 3 کروڑ کے پلاٹس ہیں، اہلیہ کے پاس 20 لاکھ روپے کے زیورات بھی ہیں۔

معاون خصوصی برائے امور نوجوانان عثمان ڈار نے اثاثوں کی مالیت 6 کروڑ روپے ظاہر کی ، انھوں نے سیالکوٹ میں زرعی اراضی اور کارروبار کی مالیت ظاہر نہیں کی۔

احساس پروگرام کی چیئرپرسن اور معاون خصوصی ڈاکٹر ثانیہ نشتر 2 کروڑ روپے سے زائد کی مالک ہیں۔ مشیر پارلیمانی امور بابر اعوان ساڑھے 16 کروڑ روپے کی جائیداد کے مالک ہیں، انھوں نے اسپین میں ایک کروڑ روپے کی جائیداد ظاہر کی جبکہ اپنے کاروبار میں 47 لاکھ روپے کی سرمایہ کاری بھی کر رکھی ہے۔ بابر اعوان کے پاس ایک کروڑ 68 لاکھ روپے کی 6 گاڑیاں اور 20 لاکھ روپے کے زیورات ہیں، ان کے پاس 5 کروڑ سے زائد نقد رقم اور 2 کروڑ سے زائد بینک بیلنس ہے۔

مشیر تجارت عبد الرزاق داؤد ایک ارب 75 کروڑ روپے اور ڈاکٹر عشرت حسین ایک ارب 70 کروڑ روپے کے مالک ہیں، معاون خصوصی برائے سی ڈی اے علی نواز اعوان کے پاس 4 کروڑ روپے کے اثاثے ہیں۔

وزیراطلاعات سینیٹر شبلی فراز نے ٹوئٹر پر لنک شیئر کیا ہے اور لکھا کہ اگر کوئی اثاثے دیکھنا چاہتا ہے تو وہ لنک کے ذریعے دیکھ لے۔

ٹرینڈنگ

مینو