بھارتی اقدامات : کشمیر اسمبلی کی مذمتی قرارداد

آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی نے مقبوضہ کشمیر میں 5 اگست کے بھارتی اقدامات ، طویل محاصرے اور مظالم کے خلاف مذمتی قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی۔

وزیراعظم آزاد کشمیر فاروق حیدر نے قرارداد پیش کی، اس میں حریت قیادت اور غیرملکی صحافیوں کی گرفتاری کی مذمت کی گئی، اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا گیا کہ کشمیر کا محاصرہ ختم کرایا جائے۔ اسمبلی نے ملکی دفاع کیلئے مسلح افواج کی قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔

وزیراعظم فاروق حیدر نے کہا کہ جب تک کشمیری زندہ ہیں آزادی کی جدوجہد جاری رہے گی، پاکستان کے پاس 2 سے 3 سال تک کا وقت ہے پھر موقع نہیں ملے گا، امید ہے پاکستان ہمیں تنہا نہیں چھوڑے گا، ہمیں جنگی بنیادوں پر سفارتی مہم کا آغاز کرنا چاہئے، کورونا کی وجہ سے سفارتی مہم متاثر ہوئی اسے دوبارہ شروع کرنا چاہئے، یہاں اسمبلی میں 12 مہاجرین ہیں بھارت ان کی مقبوضہ کشمیر میں جائیدادیں ضبط کرلے گا، وہ کشمیر کی ڈیموگرافی تبدیل کردے گا۔

ٹرینڈنگ

مینو