عقاب کی مہارت ، مچھلی کی پھرتی غارت

عقاب کی نظر پڑ جائے تو شکار کی بدقسمتی کے لمحات شروع ہوجاتے ہیں، برطانوی فوٹو گرافر نے کچھ ایسے ہی مناظر اپنے کیمرے کی آنکھ میں قید کرلئے ہیں۔

ایلن مرفی نے امریکا کی ریاست الاسکا میں مچھلیوں کا شکار کرتے عقابوں کی ایسی تصاویر کھینچی ہیں جن میں بے بس مچھلیاں اپنے سے کہیں طاقتوں پنجوں میں جکڑی نظر آرہی ہیں۔

عقاب 160 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے آسمان سے اپنے ہدف کی جانب بڑھتے ہیں۔ 6 فٹ تک پھیلے عقابوں کے پر انہیں شکار پر حملہ کرنے میں مدد دیتے ہیں۔ 6 سے 7 کلوگرام وزنی یہ پرندہ مچھلی کو اٹھا کر ایسے اڑ گیا جیسے ہوا کاغذ کو اڑا لے جاتی ہے۔

عقاب امریکا کا قومی جانور ہے اور 1963 میں بالڈ ایگلز کی تعداد صرف 834 رہ گئی تھی۔

بالڈ ایگلز کی اس وقت تعداد ڈیڑھ لاکھ سے زیادہ ہے اور یہ امریکا کی تمام ریاستوں میں پائے جاتے ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو