کیپٹن صفدر کی ضمانت، مقدمہ کس نے کرایا ؟

کراچی میں مزار قائد ایکٹ کی خلاف ورزی پر گرفتار کیپٹن (ر) صفدر کو ضمانت پر رہا کردیا گیا۔

کراچی میں جوڈیشل مجسٹریٹ ضلع شرقی وزیرمیمن نے نون لیگ کی نائب صدر مریم نواز کے شوہر کیپٹن (ر) صفدر کے خلاف مزار قائد کی بے حرمتی سے متعلق کیس کی سماعت کی ، عدالت نے ایک لاکھ روپے کے مچلکے پر ان کی ضمانت منظور کرلی۔ عدالت نے مدعی وقاص کا موبائل قبضے میں لینے اور فرانزک کرانے کا بھی حکم دیا۔

دوران سماعت نون لیگ اور پی ٹی آئی کے وکلا الجھ گئے اور جج کے سامنے شور مچاتے رہے، پولیس نے کیپٹن (ر) صفدر کو بکتر بند میں سٹی کورٹ پہنچایا اور جوڈیشل مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا تھا۔

محمد صفدر کی ضمانت کیلئے پیپلزپارٹی کا کارکن بھی اپنے گھر کے کاغذات لے کر پہنچا تھا۔

اس سے پہلے عزیربھٹی تھانے کی پولیس کیپٹن (ر) صفدر کو عدالت لے جانے لگی تو لیگی کارکنوں نے بکتر بند کو گھیر لیا۔

پولیس نے مریم نواز کے شوہر کو کراچی کے نجی ہوٹل سے گرفتار کیا تھا، ان کے خلاف مزار قائد کے احاطے میں نعرے لگانے پر شہری وقاص نے بریگیڈ تھانے میں مقدمہ درج کرایا ، اس کیس میں 200 افراد نامزد ہیں ، مقدمے میں جان سے مارنے کی دھمکی دینے ، سرکاری املاک کو نقصان پہنچانے اور مزار قائد ایکٹ کی خلاف ورزی کی دفعات شامل ہیں۔

مریم نواز نے ٹوئٹر بیان میں دعویٰ کیا تھا کہ ان کے شوہر کو ہوٹل کے کمرے کا دروازہ توڑ کر گرفتار کیا گیا۔ انھوں نے اپنے پولیٹیکل سیکرٹری ذیشان ملک کی ٹوئٹ شیئر کی تھی۔

ٹرینڈنگ

مینو