پاکستان کی حمایت جاری رہے گی، چین

پاکستان اور چین نے مشترکہ مفادات کے تحفظ اور علاقائی امن ، خوشحالی اور ترقی کو فروغ دینے کیلئے مشترکہ اقدامات پر اتفاق کیا ہے۔ بیجنگ نے کہا ہے کہ پاکستان نے علاقائی اور عالمی امن کیلئے مثالی کردار ادا کیا۔ پاکستان کی علاقائی سلامتی اور خودمختاری کی حمایت جاری رکھی جائے گی۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اور چینی ہم منصب وانگ ژی کی چین کے صوبے ہنان میں اہم ملاقات ہوئی، دفتر خارجہ سے جاری اعلامیئے کے مطابق دونوں ملک افغان مسئلے میں تعاون مزید موثر بنانے پر متفق ہوئے، برادر ممالک نے باہمی امور پر ایک دوسرے کی حمایت جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا ، پاکستان نے تائیوان، ژنگ جیانگ، تبت اور ہانگ کانگ کے معاملہ پر چین کی حمایت کے عزم کا اظہار کیا۔

اعلامیہ کے مطابق پاک چین اقتصادی راہداری منصوبہ (سی پیک) ترقی کے نئے مرحلے میں داخل ہو چکا ہے، دونوں ممالک نے سی پیک میں دیگر ممالک کی شمولیت کا خیر مقدم کیا جبکہ سی پیک کے تحت خصوصی اقتصادی زونز، صنعت ، سائنس و ٹیکنالوجی، میڈیکل ، صحت اور انسانی وسائل کی تربیت میں تعاون پر بھی اتفاق کیا۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ دونوں ممالک لازوال دوستی کو مزید مستحکم بنانے اور کثیرالجہتی شعبوں میں دو طرفہ تعاون بڑھانے کیلئے پرعزم ہیں۔ سی پیک فیز ٹو کے تحت طے شدہ منصوبوں کی بروقت اور جلد تکمیل ہماری اولین ترجیحات میں شامل ہے۔

ملاقات میں چینی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کے منشور،  سلامتی کونسل کی قراردادوں اور باہمی معاہدوں کے ذریعے حل ہونا چاہئے۔ بیجنگ ہر اس اقدام کی مخالفت کرے گا جس سے مسئلہ مزید پیچیدہ ہو ۔

شاہ محمود قریشی نے چینی ہم منصب کو مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے آگاہ کیا۔ انھوں نے کہا کہ بھارت کی ہندوتوا پالیسی علاقائی امن و استحکام کیلئے خطرہ ہے، مشرقی لداخ میں بھارتی اقدام بھی توسیع پسندانہ سوچ کا ثبوت ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو