شراب لائسنس کیس ، عثمان بزدار سے پوچھ گچھ

فروہ شمشاد

نیب حکام نے وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار سے تقریبا 2 گھنٹے تک شراب لائسنس کیس میں پوچھ گچھ کی البتہ وزیراعلی جواب دینے سے گریز کرتے رہے۔

وزیراعلی پنجاب پروٹوکول کے بغیر لاہور میں نیب آفس  پہنچے ، حکام نے ان سے پونے 2 گھنٹے تک قواعد کے خلاف شراب لائسنس جاری کرنے سے متعلق سوال کئے، عثمان بزدار بار بار کہتے رہے کہ انھیں یاد نہیں آرہا اور وہ بھول گئے ہیں۔

عثمان بزدار کو 12 صفحات پر مشتمل نیا سوالنامہ دیا گیا ہے جبکہ  ان کے اور اہلخانہ کے اثاثوں کی تفصیلات بھی طلب کرلی گئی ہیں۔

وزیراعلی نے نیب آفس سے جاتے ہی مشاورتی اجلاس بلایا اور نیب کے سوالنامے پر قانونی ماہرین سے مشاورت کی۔ عثمان بزدار نے ٹوئٹ کیا اور بتایا کہ انھوں نے کبھی غلط کام کیا نہ کسی کو کرنے دیں گے۔

شراب لائسنس کیس کی تحقیقات میں بڑی پیشرفت بھی ہوئی ہے۔ سابق ڈی جی ایکسائز اکرم اشرف گوندل نے نیب کے سامنے بیان ریکارڈ کرا دیا ہے۔ انھوں نے چیئرمین نیب کو معافی کی درخواست دی جبکہ بیان میں کہا کہ انھوں نے اس وقت کے پرنسپل سیکرٹری ٹو وزیراعلیٰ راحیل احمد صدیقی کے کہنے پر دستخط کئے۔ وزیراعلیٰ آفس کو بھی بتادیا تھا کہ این او سی پورے نہیں اور یہ قوانین کے خلاف اقدام ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو