شادیاں نہ ہونے کا غم، لڑکیوں کا احتجاج، ویڈیو

اٹلی میں شادیاں ملتوی ہونے کا غم خواتین کو سڑکوں پر لے آیا، مظاہرین نے کورونا وبا کے باعث لگائی گئی پابندیاں ختم کرنے کا مطالبہ کردیا۔

لڑکا لڑکی راضی ہونے کے باوجود شادی نہ ہوسکی تو اطالوی خواتین احتجاج پر مجبور ہوگئیں، لڑکیوں نے دلہنوں کی طرح سفید لباس پہن کر روم میں مختلف مقامات پر مظاہرہ کیا۔

مظاہرین نے پوسٹر اٹھا رکھے تھے جن پر عوامی اجتماعات پر پابندی نامنظور، خوشیاں منانے کی آزادی دو ، چرچ کے دروازے شادی کیلئے کھولو اور پابندیوں کے باعث خواب ادھورے جیسے جملے تحریر تھے۔

اس احتجاج کا اہتمام اٹالین ویڈنگ ایسوسی ایشن نے کیا تھا جس میں 2 درجن سے زائد خواتین شریک ہوئیں۔ تروی فاؤنٹین کے علاوہ پارلیمنٹ ہاوس کے سامنے بھی مظاہرہ کیا گیا۔

شادی سے متعلق صحافی کے سوال پر ایک خاتون کی آنکھیں بھیگ گئیں، اس نے بتایا کہ بیاہ ستمبر میں طے تھا لیکن پابندیوں کے باعث ایک سال کیلئے ملتوی کرنا پڑگیا۔

بنی سجی خواتین کے احتجاج میں کیٹ واک کے مناظر بھی نظر آئے اور مظاہرین کی تصاویر دنیا بھر میں وائرل ہو گئیں۔

اٹلی  کورونا وائرس سے زیادہ متاثرہ ممالک میں شامل ہے ، یہی وجہ ہے کہ ملک میں بڑے اجتماعات پر ابتک پابندی ہے۔ آئیں اس احتجاج کی مزید چند تصاویر دیکھیں۔

ٹرینڈنگ

مینو