کورونا: نواز شریف کا گھر سے نکلنا خطرناک

سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کی نئی میڈیکل رپورٹ لاہور ہائی کورٹ میں جمع کرادی گئی ، اس میں کہا گیا ہے کہ ڈاکٹروں نے نوازشریف کو گھر سے نہ نکلنے کا مشورہ دیا ہے کیونکہ کورونا وائرس ان کیلئے جان لیوا ہوسکتا ہے۔

امجد پرویز ایڈووکیٹ نے نواز شریف کی میڈیکل رپورٹ رجسٹرار آفس میں جمع کرائی، 2 صفحات پر مشتمل اس رپورٹ کے مطابق نوازشریف ہائی بلڈپریشر ، دل ، پلیٹ لیٹس ، شوگر اور گردوں کے امراض میں مبتلا ہیں، ان کے دل کو خون کی سپلائی نارمل نہیں۔

میڈیکل رپورٹ کے مطابق کورونا وبا کے دوران نواز شریف کو احتیاط کی ضرورت ہے اور معالجین نے انھیں اسپتال کے قریب رہنے کی ہدایت کی ہے۔

نواز شریف کی میڈیکل رپورٹس 4 دسمبر اور 15 دسمبر 2019ء کو بھی عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنائی جاچکی ہیں جبکہ سابق وزیراعظم کی 13 جنوری، 12 فروری ، 18 مارچ اور 28 اپریل2020 کو بھی میڈیکل رپورٹس ہائیکورٹ میں جمع کرائی گئی تھیں۔

لاہور ہائی کورٹ نے نواز شریف کو چوہدری شوگر ملز کیس میں طبی بنیادوں پر ضمانت دی تھی، اسلام آباد ہائیکورٹ نے العزیزیہ ریفرنس کی سزا معطلی اور ضمانت کی درخواستوں پر سماعت کے دوران انھیں طبی و انسانی ہمدردی کی بنیاد پر عبوری ضمانت دی تھی، اسلام آباد ہائیکورٹ نے 29 اکتوبر کو سزا 8 ہفتوں کیلئے معطل کی تھی۔ عدالت نے بیان حلفی کی بنیاد پر نواز شریف کو 4 ہفتوں کیلئے بیرون ملک جانے کی اجازت دی تو نواز شریف 19 نومبر کو لندن روانہ ہوگئے تھے۔

ٹرینڈنگ

مینو