شہر شہر کورونا کے گڑھ ، کئی علاقے سیل

محسن رضا، اسرار خان

کورونا وائرس ملک بھر میں پھیل گیا اور متاثرہ علاقوں کو بند کرنے کی نوبت آگئی، لاہور کے کئی علاقے سیل کردیئے گئے، پشاور میں اسمارٹ لاک ڈاؤن جاری ہے جبکہ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کی تجاویز پر اسلام آباد کراچی اور کوئٹہ سمیت کئی شہروں کے مختلف علاقوں میں پابندیوں کی تیاری شروع کردی گئی ہے۔

لاہور کے 69 علاقے سیل کئے گئے، ان میں رام نگر ، قلعہ گجر سنگھ ، عثمانیہ کالونی ، رائل پارک ، کریم پارک، امین پارک ، تاج پورہ شادباغ ، بیگم کوٹ ، راوی کلفٹن شاہدرہ، بادامی باغ، جوہر ٹاؤن ، کینال ویو سوسائٹی ، واپڈا ٹاؤن ، پی سی ایس آئی، گلبرگ ، داروغہ والا اور جلو موڑ کے مختلف علاقے شامل ہیں۔

ذرائع کے مطابق کراچی میں شرقی ، غربی ، کورنگی اور ملیر کے ضلعی ہیلتھ افسران نے اسمارٹ لاک ڈاؤن کی تجویز دی جس کے بعد پولیس نے حکمت عملی طے کرنا شروع کردی ہے۔

کورونا سے زیادہ متاثرہ علاقوں میں گلستان جوہر بلاک 13 ، گلشن اقبال، صفورہ گوٹھ ، عسکری 4 ،  پی ای سی ایچ ایس بلاک 2 اور 6 ،محمد علی سوسائٹی ، بہادر آباد ، عیسی نگری ،  منگھوپیر ، بلدیہ ٹاؤن ، سائٹ اور کیماڑی شامل ہیں۔

بلتی محلہ، مارٹن کوارٹر ، فاطمہ جناح کالونی ، تین ہٹی ، جہانگیر روڈ ، سولجر بازار، نمائش  ، کورنگی ناتھا خان گوٹھ، کھوکھراپار ، بھٹائی کالونی ، زمان ٹاؤن ، چکرا گوٹھ ، کورنگی ، لانڈھی ، ملیر ، شاہ فیصل کالونی ، ناصر کالونی ، عوامی کالونی ، ماڈل کالونی ، الفلاح اور ڈرگ روڈ کے کئی علاقے بھی بند کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔

لاڑکانہ کے علی گوہر آباد ، کھچی محلہ ، باکرانی روڈ اور جیلس بازار سیل کئے گئے ، سیہون شریف کے 3 اور گھوٹکی کے 4 علاقوں میں پابندیاں لگائی گئیں، حیدر آباد کے 90 علاقوں کو بند کرنے کا منصوبہ بنایا گیا اور پنو عاقل کے 7 علاقوں کو سیل کرنے کا نوٹی فکیشن جاری کردیا گیا ہے۔

پشاور کی اشرفیہ کالونی ، چنار روڈ یونیورسٹی ٹاون ، دانش آباد ، سیکٹر ای ٹو ، فیز ون اور حیات آباد میں لاک ڈاؤن جاری ہے، ان علاقوں میں میڈیکل اسٹورز اور ضروری سامان کی دکانیں کھولنے کی اجازت ہے ، سوات کی تحصیل بحرین ، مٹہ ، بابوزئی ، کبل اور بری کوٹ کے مختلف علاقے سیل کئے گئے ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو