کورونا : پھیلاؤ روکنا ناممکن، علاقے بند کرنے کا پلان

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ٹائیگر فورس کو محدود لاک ڈاؤن کی تربیت دی جائے گی، ہوسکتا ہے متاثرہ علاقوں کو بند کرنا پڑے۔

ٹائیگر فورس کے رضاکاروں سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ حکومت نے ابتدا سے ہی بہترین اقدامات کئے ، یہی وجہ ہے کہ آج حالات بہتر ہیں۔

عمران خان نے بتایا کہ انھیں معلوم تھا لاک ڈاؤن ختم ہوگا تو کورونا پھیلے گا، کورونا کو پھیلنا ہے اور ہم اسے پھیلنے سے نہیں روک سکتے، ایس او پیز پر عمل کیا تو کورونا سے بچا جاسکتا ہے البتہ ملک لاک ڈاؤن کا متحمل نہیں ہوسکتا۔

وزیراعظم نے بھارت کا ذکر کیا اور بتایا کہ وہاں لاک ڈاؤن کیا گیا لیکن پھر بھی کیسز بڑھے ، اقتصادی نقصان ہوا اور اب لاک ڈاؤن ختم کرنا پڑا۔ انھوں نے کہا کہ سابق حکومتوں کے لئے ہوئے قرضوں پر ابتک 5 ہزار ارب روپے سود دیا جاچکا ہے۔ ملک کو 800 ارب روپے ٹیکس کی کمی کا سامنا ہے، حکومت کو خرچے کم کرنے اور آمدنی بڑھانے کے ذرائع تلاش کرنے ہوں گے۔

عمران خان نے ٹائیگر فورس کے رضاکاروں کو بتایا کہ انھیں کارڈ بنا کردیئے جائیں گے۔ ٹائیگر فورس انتظامیہ کو نشاندہی کرے گی کہ کہاں ایس او پیز پر عمل نہیں کیا جارہا۔ اس فورس کا اصل کام لوگوں سے ایس او پیز پر عمل کرانا ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو