سپر ماڈل زارا عابد کی زندگی ، ویڈیو

ارم یمین

کراچی میں تباہ پی آئی اے کے طیارہ میں سپر ماڈل زارا عابد بھی موجود تھیں، طیارے میں سوار 99 افراد میں سے صرف 2 بچ سکے ہیں۔

وہ جسے اڑتے ہوئے پرندے پسند تھے اور جسے اونچی اڑان اچھی لگتی تھی اس نے سوچا بھی نہ ہوگا کہ منہ سے نکلی بات اس طرح پوری ہوجائے گی۔

View this post on Instagram

~ Fly high, it’s good #ZaraAbid

A post shared by Zara Abid (@zaraabidofficial) on

سپر ماڈل زارا عابد لاہور میں پیدا ہوئی تھیں لیکن کراچی میں پلی بڑھیں۔

وہ اپنی گندمی رنگت کی وجہ سے فیشن انڈسٹری میں کئی مسائل جھیلتی رہی تھیں لیکن انھیں اپنے رنگ پر ناز تھا۔

زارا عابد کہتی تھیں سانولی رنگت کی حامل لڑکیوں کو کمتری کا شکار نہیں ہونا چاہئے اور انھیں معاشرے میں آگے بڑھنے کا موقع دیا جانا چاہئے۔

سپر ماڈل اپنی اسمارٹنس کی وجہ سے انڈسٹری میں بے انتہا مقبول تھیں اور ہر کپڑا ان پر بھاتا تھا۔

ان کے جسم پر ہر رنگ جچتا تھا ،وہ غیرمعروف برانڈ کے کپڑے پہن کر انہیں شہرت کی بلندیوں پر پہنچا دیتی تھیں۔

برائیڈل ویئر بھی ان پر خود جچتے تھے ، وہ عروسی ملبوسات کی نمائش میں مرکز نگاہ ہوتی تھیں۔

ایک سے بڑھ کر ایک برانڈ انھیں اپنے ملبوسات پیش کرتا تھا ، وہ پارٹی ویئر میں بھی بے حد دلکش نظر آتی تھیں۔

زارا فیشن برانڈ ثنا سفیناز ، وجاہت منصور ، انص ابرار ، ظہیر عباس ، دیپک اینڈ فرہاد ، الکرم ، گل احمد ، کیسریا ، دھنک اور کتنے ہی دیگر معروف ڈیزائنرز کے ملبوسات زیب تن کرتی رہی تھیں۔

اپنے ان مٹ نقوش اور چہرے کے تاثرات کی وجہ سے وہ کئی ملٹی نیشنل کمپنیز کے اشتہاروں میں بھی کام کرچکی تھیں۔

زارا کو اداکاری کا شوق تھا اور انھوں نے عظیم سجاد کی فلم چوہدری میں کام کیا تھا ، وہ مزید فلموں میں کام کرنا چاہتی تھیں لیکن انھیں ماڈلنگ سے فرصت ہی نہیں مل پاتی تھی۔

انھیں اسی سال ہم اسٹائل ایوارڈز میں بیسٹ ماڈل فی میل کا اعزاز دیا گیا تھا۔

انسٹاگرام پر زارا عابد کی 80 ہزار فالوانگ تھی ، طیارہ حادثے کی خبر نے ان کے مداحوں کو اداس کردیا ہے۔

ان کی عمر 28 برس تھی اور قدر 5 فٹ 8 انچ تھا جسے ماڈلنگ کے لئے بہترین سمجھا جاتا ہے۔

پی آر سے وابستہ فریحہ الطاف کا کہنا ہے کہ زارا عابد لاہور میں اپنے قریبی عزیز کے انتقال میں شرکت کے بعد کراچی آرہی تھیں کہ حادثہ پیش آگیا۔

ٹرینڈنگ

مینو