کس سیاستدان نے کتنا ٹیکس دیا ؟ پتہ چل گیا

فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے ارکان پارلیمنٹ کی 2018 کی ٹیکس ڈائریکٹری جاری کردی، سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے سب سے زیادہ ٹیکس دیا جبکہ وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار اور وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈا نے ٹیکس ادا ہی نہیں کیا۔

ایف بی آر کی ٹیکس ڈائریکٹری کے مطابق سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے  24 کروڑ 13 لاکھ 29 ہزار 362 روپے ٹیکس دیا۔

وزیراعظم عمران خان نے 2 لاکھ 82 ہزار 449 روپے ، صدر مسلم لیگ نون شہباز شریف نے 97 لاکھ 30 ہزار 545 روپے ، حمزہ شہباز نے 87 لاکھ 5 ہزار 368 روپے ، پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری نے 28 لاکھ 91 ہزار 455 روپے اور بلاول بھٹو نے 2 لاکھ 94 ہزار 117 روپے ٹیکس ادائیگی کی، رانا ثناء اللہ نے 13 لاکھ 88 ہزار 275 روپے ٹیکس کی مد میں دیئے۔

حماد اظہرنے 5 کروڑ 94 لاکھ 42 ہزار 700 روپے، عمر ایوب نے 2 کروڑ 60 لاکھ 55 ہزار 517 روپے ، اسد عمر نے 53 لاکھ 46 ہزار 342 روپے ، شیخ رشید نے 5 لاکھ 79 ہزار 11 روپے ، فرخ حبیب نے ایک لاکھ 83 ہزار 727 روپے ، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے 1 لاکھ 83 ہزار 9سو روپے اور نور عالم خان نے 30 ہزار 458، ریاض فتیانہ نے 11 ہزار روپے ادا کئے۔

وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے ٹیکس نہیں دیا، وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے  48 لاکھ 8ہزار 948روپے ، وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے 10 لاکھ 22ہزار184 روپے اور وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے 2 لاکھ 35 ہزار 982 روپے ٹیکس ادا کیا۔

سندھ میں سب سے زیادہ ٹیکس کلیشن ہوئی اور پنجاب میں فائلرز کی تعداد زیادہ ہونے کے باوجود صوبہ دوسرے نمبر پر رہا۔ سندھ سے 44.91 فیصد، پنجاب 34.99، اسلام آباد 14.77،  کے پی کے 3.54، بلوچستان 1.67 اور گلگت بلتستان سے 0.12 فیصد ٹیکس جمع ہوا۔

شہروں کے اعتبار سے کراچی میں سب سے زیادہ 209 ارب 10 کروڑ 71 لاکھ 38 ہزار روپے ٹیکس جمع کیا گیا۔ ضلع جنوبی سے 114 ارب 22 کروڑ 99 لاکھ 55 ہزار، ضلع وسطی سے 9 ارب 5 کروڑ 93 لاکھ 71 ہزار روپے، ضلع شرقی سے 34 ارب 9 کروڑ 25 لاکھ روپے ٹیکس جمع کیا گیا۔

ٹرینڈنگ

مینو