نوازشریف کو وطن لانے کا حکومتی فیصلہ

محمد عثمان

حکومت نے نون لیگ کے قائد میاں نوازشریف کو وطن واپس لانے کیلئے عدالت جانے کا اعلان کردیا۔

وزیر اطلاعات شبلی فراز نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ نواز شریف باہر بیٹھ کر سیاست کر رہے ہیں، ان کا بلاول بھٹو اور فضل الرحمان سے رابطہ ہے البتہ شہباز شریف سے رابطہ نہیں، وہ بیماری کا بہانہ بنا کر ملک سے فرار ہوئے، نوازشریف کو واپس آنا چاہئے اور حکومت انھیں واپس لائے گی۔

اس سے پہلے وزیرریلوے شیخ رشید احمد نے راولپنڈی کینٹ میں پوسٹ گریجویٹ کالج برائے خواتین کی افتتاحی تقریب سے خطاب کیا، انھوں نے کہا کہ مریم نواز اپنے چچا شہباز شریف کو پھنسانے جارہی ہیں۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ شہبازشریف تاش کی بازی سجاتے ہیں اور مریم کھیل خراب کردیتی ہیں، مریم نواز نے پتھر نیب آفس پر نہیں شہباز شریف کی سیاست پر برسائے تھے۔

وفاقی وزیر نے بتایا کہ حکومت میاں نوازشریف کو اشتہاری قرار دلوانے اور وطن لانے کیلئے عدالت جائے گی، نواز شریف نے عدالت میں دائر درخواست اس لئے واپس لی کیونکہ انھیں اندازہ ہوگیا تھا کہ فیصلہ کچھ بھی آسکتا ہے۔

بلاول بھٹو سے متعلق سوال پر شیخ رشید بولے بلاول بچہ ہے اور تھوڑا کچا ہے، اسے رہنے دیں، اپوزیشن رہنما حکومت مخالف جدوجہد میں مولانا فضل الرحمان کو تنہا چھوڑ دیں گے۔ وزیراعظم عمران خان نیب زدہ لوگوں کو کبھی این آر او نہیں دیں گے۔

ٹرینڈنگ

مینو