ایران پر اسلحے کی پابندی میں توسیع کا مطالبہ

خلیجی تعاون کونسل کے رکن ممالک نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے ایران پر عائد اسلحے کی خریداری کی پابندی میں توسیع کا مطالبہ کردیا۔

خلیجی ممالک بحرین ، کویت ، عمان ، قطر اور متحدہ عرب امارات نے سلامتی کونسل کو لکھے گئے خط میں کہا ہے کہ ایران دہشت گرد تنظیموں کو ہتھیار فراہم کرتا ہے جبکہ شام ، بحرین ، کویت اور سعودی عرب میں دہشت گردوں کی حمایت بھی کر رہا ہے۔ ایرانی اقدامات سے مختلف ممالک میں غیریقینی صورتحال اور امن وامان کے مسائل پیدا ہوئے ہیں۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان عباس موسوی نے خط کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس غیرذمے دارانہ اقدام سے امریکی مفادات کو توقیت پہنچائی گئی۔ انھوں خلیجی ممالک پر خطے میں سب سے زیادہ ہتھیار خریدنے پر بھی تنقید کی۔

ایران پر اسلحے کی پابندی ختم ہونے میں 2 ماہ رہ گئے ہیں ، امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو پہلے ہی وارننگ دے چکے ہیں کہ ایران کو ہتھیار خریدنے کی اجازت دینا مشرق وسطی میں عدم استحکام کا باعث جبکہ اسرائیل اور یورپ کیلئے بھی خطرناک ہوگا۔

اقوام متحدہ نے 2010 میں ایران پر پابندی لگائی تھی جس کے تحت تہران جنگی طیارے ، ٹینک اور دیگر ہتھیاروں کی خریداری نہیں کرسکتا۔

ٹرینڈنگ

مینو