ڈیٹاہیک: لیڈی گاگا کا راز فاش، ٹرمپ بھی نشانہ

ہیکرز نے دنیا کی معروف انٹرٹینمینٹ لاء فرم کا ڈیٹا ہیک کر کے لیڈی گاگا کا کچا چٹھا کھول دیا ہے۔ ہیکرز نے دھمکی دی ہے کہ انہیں 4 کروڑ 20 لاکھ ڈالرز فوری طور پر نہ دیئے گئے تو وہ صدر ٹرمپ کے بھی ماضی اور حال کا حساب کتاب پوری دنیا کو دکھا دیں گے۔

بدنام زمانہ ہیکر گروپ آرای ویل کا تعلق مشرقی یورپ سے بتایا گیا ہے۔ گروپ نے نیویارک کی گرب مین شائرمیسیلاس اینڈ سیکس کمپنی کے ڈیٹا پر ہاتھ ڈالا ہے اور اس کے نامور کلائنٹس کی نجی ای میلز، کنٹریکٹ اور ذاتی معلومات چرانے کا دعویٰ کیا ہے۔

کمپنی کی انتظامیہ نے ہیکرز کے مطالبات منظور کرنے سے انکار کردیا تھا۔ اس پر گروپ نے 2.4 گیگا بائٹ ڈیٹا ڈارک ویب پر ڈال دیا۔ اس میں وہ قانونی امور بھی شامل ہیں جو کمپنی نے لیڈی گاگا کے ساتھ طے کئے تھے۔

چرائی گئی زیادہ تر معلومات پروڈیوسرز ، معاونین ، ٹور پر ساتھ جانے والوں اور سمجھوتوں سے متعلق ہیں تاہم یہی کمپنی بروس اسپرنگسٹین اور میڈونا جیسے گلوکاروں کو بھی ڈیل کرتی ہے۔ اس لئے میوزک انڈسٹری سمیت ہالی ووڈ میں کھلبلی مچ گئی ہے۔

کمپنی کا صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے کبھی تعلق نہیں رہا تاہم ہیکرز نے دھمکی دی ہے کہ اگر اسے رقم نہ دی گئی تو وہ صدر ٹرمپ کی ڈرٹی لانڈری انٹرنیٹ پر ڈال دے گی۔

ہیکرز نے رقم جمع کرانے کیلئے ایک ہفتے کی ڈیڈ لائن دی ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے خبردار کیا ہے کہ اگر رقم نہ دی گئی تو وہ صدر ٹرمپ سے متعلق ایسی معلومات انٹرنیٹ پر ڈال دیں گے کہ ان کا دوبارہ صدر بننے کا خواب چکنا چور ہوجائے گا۔

آر ای ویل نے جن شوبز اسٹار کو نشانہ بنایا ہے ان میں پریانکا چوپڑا بھی شامل ہیں۔

ہیکرز نے گلوکارہ نکی مناج کے بارے میں بھی معلومات حاصل کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

امریکی گلوکارہ ، اداکارہ اور پروڈیوسر مرایہ کیری بھی ہیکرز کا نشانہ بنی ہیں، دیگر شخصیات میں میری جے ، ایلا مائی، کیم نیوٹن اور جیسیکا سمپسن شامل ہیں۔

ٹرینڈنگ

مینو