کورونا کیسز : پاکستان پر انگلیاں اٹھنے لگیں

برطانیہ میں دائیں بازو کے میڈیا نے کورونا کیسز کو پاکستان کے سر تھوپنا شروع کردیا۔

برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ برطانیہ آنے والے کورونا سے متاثرہ افراد میں سے نصف پاکستان سے آئے، اس صورتحال میں ہائی رسک والے ممالک سے آنے والوں کیلئے سخت اقدامات اور قرنطینہ کی نگرانی ضروری ہوگئی ہے۔

پبلک ہیلتھ کے ڈیٹا کا حوالہ دیتے ہوئے برطانوی میڈیا نے بتایا کہ 4 جون سے اب تک برطانیہ آنے والے 30 کورونا مریضوں کا تعلق پاکستان سے تھا ، یکم مارچ سے ایک ہزار 190 فلائٹس پاکستان سے آچکی ہیں، پاکستان میں روزانہ تقریبا 4 ہزار کورونا کیس رپورٹ ہورہے ہیں اور لاک ڈاون میں نرمی کے بعد متاثرین کی تعداد بڑھ رہی ہے۔

برطانوی میڈیا کے مطابق ابتک تقریبا 65 ہزار افراد برطانیہ آچکے ہیں ان میں سے اکثریت برطانوی پاسپورٹ ہولڈرز کی تھی۔ ایسی رپورٹ بھی سامنے آئی ہیں کہ کئی افراد کو برطانیہ پہنچتے ہی اسپتالوں کے انتہائی نگہداشت وارڈ  منتقل کرنا پڑا۔

متحدہ عرب امارات کی فضائی کمپنی ایمریٹس ایئرلائن کورونا وائرس کے باعث پاکستان کیلئے فضائی آپریشن عارضی طور پر معطل کرچکی ہے۔

ٹرینڈنگ

مینو